پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیر شعبہ کیلئے 23 ارب 50 کروڑ روپے مختص

 

لاہور (شاکر محمود اعوان) حکومت پنجاب نے پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیر کے شعبے پر 23 ارب 50 کروڑ خرچ کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کے شعبہ میں رواں سال 39 نئی اسکیموں کا آغاز جبکہ 92 اسکیمیں مکمل کی جائیں گی۔ متعدد اضلاع میں نئے اسپتال اور نرسنگ کالجز بھی بنائے جائیں گے۔

 

تفصیلات کے مطابق پنجاب حکمومت نے رواں سال پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کے شعبے میں اصلاحات اور اپ گریڈیشن کا فیصلہ کیا ہے۔ محکمہ صحت کے مطابق راجن پور، لیہ اور میانوالی میں 200 بیڈ پر مشتمل مدر اینڈ چائلڈ، اسپتال اور نرسنگ کالجز بھی بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

 

راولپنڈی واہ جنرل اسپتال کو 100 بیڈز سے بڑھا کر 500 بیڈز، ڈی جی خان تونسہ میں تحصیل ہیڈ کواٹر اسپتال کو 100 سے 190 بیڈ تک، ٹیکسلہ کے ٹی ایچ کیو اسپتال کو 40 سے 100 بیڈز تک بڑھایا جائے گا۔

 

محکمہ صحت زرائع کا کہنا ہے کہ ملتان غلہ گودام میں 60 بیڈوں پر مشتمل اسپتال، راولپنڈی جوڑیاں چکری روڈ پر 60 بیڈز اسپرال کا قیام جبکہ ڈسٹرکٹ رحیم یار کے آر ایچ سی کو ٹی ایچ کیو میں تبدیل کرکہ 60 بیڈز میں تبدیل کیا جائے گا۔

 

محکمہ صحت کے مطابق میاں چنوں میں ٹی ایچ کیو اسپتال کو اپ گریڈ، میجر شبیر شریف شہید اسپتال گجرات میں ایمرجینسی وارڈ کو وسیع کیا جائے گا اور ضلع گجرانولہ کی تحصیل ورکاں میں ڈایلیسز سنٹر کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔

 

محکمہ صحت ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب کے تمام ڈی ایچ کیو اور 15 ٹی ایچ کیو اسپتالوں کی تزین آرائش کی جائے گی اور پنجاب میں ہیپٹائٹس کو کنٹرول کرنے کے لیے خصوصی اقدامات کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں