5 فروری یوم یکجہتی کشمیر، شہادتوں اور وفاؤں کے تجدید عہد کا دن

پبلک نیوز: میرے وطن تیری جنت میں آئیں گے ایک دن، 5 فروری یوم یکجہتی کشمیر، شہادتوں اور وفاﺅں کے تجدید عہد کا دن، کشمیر میں ظلم وجبر کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ دنیا کا ضمیر اب بھی خاموش ہے، پر خون شہیداں رنگ لائے گا، آزادی کا سورج ضرور طلوع ہو گا۔

 

مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی نسل کشی جاری۔ بھاری ہتھیاروں سے شہریوں کو نشانہ بنایا جاتا ہے۔ قبریں تازہ اور کفن خون سے بھیگے ہوئے ہیں۔ طرفہ تماشا یہ کہ کشمیر ظلم و جبر کی بھٹی میں پس رہا ہے۔ ایک لاکھ سے زائد کشمیری جام شہادت نوش کر چکے ہیں۔

 

کشمیری ہر روز جنازے اٹھاتے ہیں مگر سر جھکانے سے انکاری ہیں۔ آٹھ لاکھ سکیورٹی فورسز اہلکاروں کا پہرہ ہے اور وادی فوجی چھاﺅنی میں تبدیل ہو چکی ہے۔ خون، زخم، اشکوں، بارود اور انگاروں سے بھری وادی انسانی حقوق کی علم بردار تنظموں کو صدائیں دے رہی ہے۔

 

ایک طرف ظالم بھارتی فورسز کا سرچ آپریشن کے نام پر ظلم و بربریت تو دوسری جانب انسانی حقوق پامالی کا سلسلہ جاری ہے۔ کبھی پیلٹ گن سے وار تو کبھی خودکار ہتھیاروں سے خون کا ہولی، شہادتوں کے بعد جنازے اٹھتے ہیں تو کہرام مچ جاتا ہے۔

 

مظلوموں کی آہ بکا، فریاد اور نالے ہر طرف سنائی دیتے ہیں۔ نہتے کشمیریوں کا احتجاج، ہڑتالیں پھر بھی عالمی ضمیر خاموش ہے۔

 

ہر نظر سراپا سوال بنی ہوئی ہے کہ عالمی طاقتوں کے گٹھ جوڑ کو خون کی لت لگ چکی ہے یا انہیں کشمیر میں ہوتا ظلم نظر نہیں آتا؟

 

ہمارے ہاں حکمرانوں نے تساہل برتا۔ ان کی صحت پر ہمیشہ مجبوریوں کی گھاس اگی رہی۔ کوئی مودی سرکار سے پینگیں بڑھانے تو کوئی وقت گزارو پالیسی پر عمل پیرا رہا۔ کشمیری آج بھی شہدا کو پاکستانی پرچم میں دفناتے اور قبر پر پاکستان کا سبز ہلالی علم لہراتے ہیں۔

 

کوئی سیاہ رات ایسی نہیں جس کی سحر نہ ہو۔ خون شہیداں ضرور رنگ لائے گا۔ غلامی کی سیاہ رات چھٹے گی اور آزادی کا سورج طلوع ہو گا۔

حارث افضل  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں