قطر: امریکا، طالبان امن معاہدے کا 9 واں دور، مذاکرات حتمی مراحل میں داخل

 

پبلک نیوز: قطر میں امریکا، طالبان امن معاہدے کا 9 واں دور جاری ہے۔ مذاکرات حتمی مراحل میں داخل ہو گئے۔ پینٹاگون نے خبردار کر دیا کہ امریکی فوج کی واپسی کا مطلب یہ نہیں کہ دہشت گرد افغانستان میں کارروائیاں جاری رکھیں۔

 

تفصیلات کے مطابق قطر کے دارالحکومت دوحہ میں امن معاہدے کا 9 واں دور جاری ہے، جس میں معاہدے کو حتمی شکل دی جا رہی ہے۔ امریکا کے چیئرمین جوائنٹ چیف آف سٹاف کمیٹی جنرل جوزف ڈنفورڈ کا کہنا تھا کہ  طالبان کے ساتھ مذاکرات میں اس بات کو یقینی بنانا ہوگا کہ امریکہ پر حملہ کرنے کے لیے اب افغانستان دہشت گردوں کا محفوظ ٹھکانہ نہیں ہے۔

 

جنرل جوزف ڈنفورڈ کا کہنا تھا کہ افغانستان میں تقریباً 2 دہائیوں تک جنگ لڑنے کے بعد اب امریکی فوجیوں کی واپسی کے معاہدے کا مطلب یہ نہیں کہ دہشت گرد تنظیموں کو افغانستان میں اپنی سرگرمیاں جاری رکھنے کی اجازت مل جائے۔

 

چیئرمین جوائنٹ چیف آف سٹاف کمیٹی کا مزید کہنا تھا کہ وہ امریکی فوج کے لیے اس وقت انخلا کا لفظ استعمال نہیں کر رہے۔ افغانستان دہشت گردوں کا محفوظ ٹھکانہ نہ بنے اور یہاں امن و امان قائم ہو۔ اس کے لیے کوشش کر رہے ہیں۔

 

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں