شاہد خاقان عباسی کا 13 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور

 

اسلام آباد(پبلک نیوز) احتساب عدالت نے ایل این جی اسکینڈل کیس میں گرفتار سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا 13 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا۔ عدالت نے شاہد خاقان عباسی کو گھر والوں سے ملنے کی اجازت بھی دے دی۔ نیب کو یکم اگست کو شاہد خاقان عباسی کو دوبارہ پیش کرنے کی ہدایت کر دی گئی۔

 

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت نے ایل این جی اسکینڈل کیس میں گرفتار سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا 13 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا گیا۔ شاہد خاقان عباسی ک جانب سے کہا گیا کہ میں چاہتا ہوں 90 روزہ ریمانڈ دے دیا جائے۔ جس کے جواب میں جج محمد بشیر کا کہنا تھا کہ قانون میں ایسا نہیں ہے کہ ایک ساتھ 90 دن کا جسمانی ریمانڈ دے دیا جائے۔

 

سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ پھر جتنا دینا چاہتے ہیں دے دیں مجھے کوئی اعتراض نہیں۔ نیب نے جو الزامات لگائے گئے ہیں بے بنیاد ہیں۔ میں نے تفتیشی سے پوچھا کہ مجھے بتایا جائے کیا الزامات ہیں۔

 

خاقان عباسی کے وکیل نے اس بات کی درخواست کی کہ فیملی کو ملنے دیا جائے۔ جس پرعدالت کی جانب سے بلڈ ریلیشن سے ملنے کی اجازت دے دی گئی۔

 

شاہد خاقان کا مزید کہنا تھا کہ گھر کے کھانے کی بھی اجازت دی جائے، میرا پرہیزی کھانا ہوتا ہے۔ جس کے جواب میں جج محمد بشیر کا کہنا تھا کہ نیب والے بھی پرہیزی کھانا بنا دیں گے۔

 

احمد علی کیف  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں