پاکستان کنگال ملک ہے، مشیر وزیراعظم عبدالرزاق داؤد

پبلک نیوز: وزیراعظم کے مشیر برائے تجارت عبدالرزاق داؤد کا بیان سامنے آیا ہے جس میں انھوں نے کہا ہے کہ پاکستان کنگال ملک ہے۔ سٹیل مل بند کرنے میں مجرمانہ غفلت برتی گئی، سٹیل مل چلانے کا فیصلہ ای سی سی اور کابینہ کرے گی۔

سینٹ کی قائمہ کمیٹی صنعت و پیداوار کا چئیرمین احمد حسن کی زیر صدارت اجلاس ہوا۔ اجلاس میں میں سٹیل ملز کے مختلف حصوں کو چلانے کے حوالے سے کمیٹی کو بریفنگ دی گئی۔ بریفنگ میں بتایا گیا کہ سٹیل ملز میں ملازمین کی تعداد دس ہزار ہے لیکن چار ہزار لوگ بھی ٹیکنیکل نہیں ہیں۔

چئیرمین کمیٹی نے کہا کہ سٹیل ملز حکام کے پاس کوئی پلان موجود نہیں، بڑے قومی ادرے کو تباہ کر دیا۔ سٹیل ملز کی کل انیس ہزار کینال زمین ہے جس کی قیمت اربوں روپے بنتی ہے۔

 سٹیل مل کے چیف فنانشل آفیسر نے کمیٹی کو بتایا کہ اسٹیل ملز کی جیٹی چلانے کے لیے چار ارب دو کروڑ روپے درکار ہیں۔ اسٹیل ملز جیٹی چلانے سے ایک اعشاریہ دو ارب روپے سالانہ کما سکتی ہے۔

سینیٹر نعمان وزیر نے کہا کہ اسٹیل ملز میں سفارشی اور نکمے ملازمین مستقل کرائے۔ اسٹیل ملز افسرسفارشی ملازمین کو بھگتیں۔

مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد نے کہا کہ کرپشن کی وجہ سے اسٹیل ملز بند کرنا پڑی، جس میں مجرمانہ غفلت برتی گئی۔

قائمہ کمیٹی اجلاس میں سوئی سدرن گیس کمپنی کی جانب سے سٹیل مل کی گیس بند کرنے سے مشینری اور سامان تباہ ہونے کا انکشاف بھی کیا گیا۔ کمیٹی کو بتایا گیا ہے کہ بارہ ارب روپے کا خام مال اور ادھورا میٹریل پڑا ہے۔

مشیر تجارت نے کہا کہ تین روسی اور تین چینی کمپنیاں اسٹیل ملز چلانے میں دلچسپی کا اظہار کر رہی ہیں۔ اسٹیل ملز بحالی کا فیصلہ ای سی سی اور کابینہ کرے گی۔

مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد کے پاکستان کنگال ملک کہنے پر چئیرمین پاکستان اسٹیل لائن پائپ انڈسٹری ایسوسی نے کہا کہ ‏آپ پاکستان کو کنگال ملک نہیں کہہ سکتے، آپ الفاظ واپس لیں۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں