ایف آئی اے نے 11جولائی کو آصف زرداری، فریال تالپور کو طلب کر لیا

کراچی(پبلک نیوز) ایف آئی اے کا بڑا ایکشن۔ منی لانڈرنگ کیس میں وفاقی تحقیقاتی ادارے نے سابق صدر مملکت آصف زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کو بیانات قلمبند کروانے کے لئے 11 جولائی کو طلب کر لیا۔

منی لانڈرنگ کیس پیپلز پارٹی کے شریک چئیرمین اور سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری اور انکی ہمشیرہ فریال تالپور کے لئے مشکلات کا باعث بنتا جا رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق ایف آئی اے نے آصف زرداری اور فریال تالپور کو بیان رکارڈ کرانے کے لئے11 جولائی کو ایف آئی اے اسٹیٹ بینک سرکل طلب کر لیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں ایف آئی اے انسپکٹر محمد علی ابڑو نے پیپلز پارٹی کے دونوں رہنماؤں کو طلبی کے نوٹسز جاری کر دیئے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایف آئی اے آصف زرداری کے قریبی ساتھی حسین لوائی کے مقدمے میں تمام ملزمان کی نشاندہی کر چکی ہے۔ دونوں سیاسی رہنماؤں کی طلبی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے۔

ایف آئی اے بے نامی اکاؤنٹ سے مبینہ منی لانڈرنگ کیس میں 32 افراد کے خلاف تحقیقات کر رہی ہے۔ اس سلسلے میں آصف زرداری، ان کی ہمشیرہ فریال تالپوراور قریبی ساتھی انور مجید کا نام سپریم کورٹ کی ہدایت پر پہلے ہی ایگزیکٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کیا جاچکا ہے ۔

سپریم کورٹ آف پاکستان آصف زرداری اور فریال تالپور کو 12 جولائی کو طلب کر چکی ہے۔ ایف آئی اے نے سپریم کورٹ میں پیشی سے صرف ایک دن پہلے دونوں نامزد ملزمان کو طلب کر لیا ہے۔ طلبی کا نوٹس ایف آئی اے انسپکٹر محمد علی ابڑو کی جانب سے جاری کیا گیا۔

1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں