کرپشن کے بعد اسمگلنگ کا ناسور ملکی معیشت کو چاٹنے لگا

اسلام آباد (پبلک نیوز) نان کسٹم پیڈ اشیاء ایف  بی آر کے لیے چیلنج بن گیا۔ ہر سال اربوں روپے مالیت کی نان کسٹم اشیا ضبط کی جاتی ہیں لیکن اس کے باوجود مختلف اشیا کی سمگلنگ جا ری ہے۔

 

کرپشن کے بعد سمگلنگ کا ناسور بھی ملکی معیشت کو چاٹنے لگا۔ نان کسٹم پیڈ اشیاء ملکی معیشت کے لیے ناسور بن گئی۔ ہر سال اربوں کی نان کسٹم پیڈ اشیاء ضبط کی جاتی ہیں۔ دستاویزات کے مطابق سال 2018 میں جولائی سے دسمبر تک اٹھارہ ارب 52 کروڑ روپے سے زائد اشیاء ضبط کی گئی، جولائی 2017 سے جون 2018 تک 25 ارب 35 کروڑ روپے سے زیادہ نان کسٹم اشیاء ضبط کی گئی۔

 

دستاویزات کے مطابق جولائی 2016 سے جون 2017 تک 15 ارب65 کروڑ روپے سے زائد نان کسٹم پیڈ اشیاء ضبط کی گئی۔ جولائی 2016 سے جون 2015 تک 14 ارب34 کروڑ روپے سے زائد نان کسٹم پیڈ اشیاء ضبط کی گئی۔ جولائی 2015 سے جون 2014 تک 9 ارب 58 کروڑ روپے سے زائد نان کسٹم پیڈ اشیاء ضبط کی گئی۔ جولائی 2013 سے جون 2014 تک سات ارب چالیس کروڑ روپے سے زیادہ نان کسٹم پیڈ اشیاء ضبط کی گئی۔

 

ضبط کی گئی اشیاء میں گاڑیاں، موٹر سائیکلز، الیکٹرانک کا سامان، کپڑے، سگریٹ، پان، چھالیہ اور دیگر سامان شامل ہے۔ ایف بھی آر کی کوشش ہے کہ کسی طرح نان کسٹم اشیاء کی روک تھام کے لیے اقدامات کئے جائیں تاکہ خزانے کو ان سے ٹیکس مل سکے۔

حارث افضل  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں