پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان آج معاہدہ طے پانے کا امکان

اسلام آباد(پبلک نیوز) پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات کا فائنل راؤنڈ آج ہو گا، معاہدہ طے پانے پر وزارت خزانہ اور آئی ایم ایف حکام مشترکا پریس کانفرنس کریں گے۔ پاکستان کو 6 سے 8 ارب ڈالر کا قرض ملنے کی توقع ہے۔

 

ذرائع کے مطابق پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان آج معاہدہ طے پانے کا امکان ہے، وزارت خزانہ اور آئی ایم ایف جائزہ مشن نے نئے قرضہ پروگرام کی تمام جزیات طے کر لیں۔ پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات کافائنل راؤنڈ آج ہو گا۔ ذرائع وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف ایگزیکٹو بورڈ جائزہ مشن کی رپورٹ کی روشنی میں پاکستان کے لیے قرضہ پروگرام کی منظوری دے گا۔ معاہدہ طے نہ پایا تو الگ الگ پریس ریلیز جاری کی جائے گی۔

 

ذرائع وزارت خزانہ کے مطابق معاہدہ طے پانے پر وزارت خزانہ اور آئی ایم ایف حکام مشترکا پریس کانفرنس کریں گے۔ پاکستان کو 6 سے 8 ارب ڈالر کا قرض ملنے کی توقع ہے۔ حکومت نے آئی ایم ایف کو اگلے بجٹ میں 750 ارب روپے کے ٹیکس لگانے کا ورکنگ پلان پیش کر دیا۔ الیکٹرانکس اور فوم انڈسٹری کی مصنوعات کی پرچون قیمت پر سیلز ٹیکس لاگو کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، جی ایس ٹی کی معیاری شرح 17 سے بڑھا کر18 فیصد کرنے کا بھی امکان ہے۔

 

بجٹ خسارے کو 4.5 فیصد تک محدود کیا جائے گا، ایف بی آر کا ریوینیو ٹارگٹ 5400 ارب روپے تک مقرر کیا جائے گا، توانائی سمیت متعدد شعبوں میں سبسڈی ختم کی جائے گی، خسارے میں چلنے والے اداروں کی نجکاری کا پلان آئی ایم ایف کو دیا جائے گا، تنخواہ پر ٹیکس کی شرح کو جون 2018 کی شرح سے لاگو کیا جائے گا، حکومت ڈالر کی قیمت کو کنٹرول نہیں کرے گی۔ شرح سود 12 فیصد تک لائی جائے گی۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں