پاکستانی فضائی حدود کی جزوی بندش، بھارت کو بڑا نقصان، کیبن کریو کی شدید قلت

لاہور (پبلک نیوز) پاکستان کی فضائی حدود کی جزوی بندش، بھارت کو لینے کے دینے پڑ گئے۔ ائیر انڈیا کروڑوں کا نقصان کروانے کے بعد اب کیبن کریو کی شدید قلت کا شکار، اضافی سٹاپ اوورز کے باعث ائیر انڈیا کو مزید عملے کی ضرورت، ان ایکٹو کیبن کریو کو بھی طلب کر لیا گیا۔

 

پاکستان کے ساتھ کشیدگی کو بڑھاوا دینا اب بھارت کو مہنگا پڑتا جا رہا ہے۔ 27 فروری سے پاکستان کی فضائی حدود کی جزوی بندش کے باعث بھارت کی قومی فضائی کمپنی ائیر انڈیا اب کیبن کریو کی قلت کا شکار ہے۔ پاکستان کی فضائی حدود بند ہونے کے بعد ائیر انڈیا کی مغرب بالخصوص امریکہ کو جانے والی پروازیں اب ایران اور سلطنت اومان کی فضائی حدود استعامل کر رہی ہیں۔

 

ائیر انڈیا کو ری فیولنگ کے لیے شارجہ میں اضافی سٹاپ اوور کرنا پڑ رہا ہے جس کے باعث اب اسے مزید عملے کی فوری ضرورت ہے۔ ائیر انڈیا نے اپنے ان ایکٹو کیبن کریو کو طلب کر لیا ہے۔ 15 مارچ کو لکھے گئے خط میں تمام ان ایکٹو کیبن کریو کو حاضری کا حکم دیا گیا یے۔

 

ائیر انڈیا کی سان فرانسسکو، نیویارک اور نیوارک کے لیے پروازیں بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔ کیبن کریو کی کمی اور اضافی سٹاپ اوورز نے ائیر انڈیا کی مشکلات بڑھا دی ہیں۔ امریکہ جانے والی پروازوں کے شارجہ میں سٹاپ اوورز سے کیبن کریو کے اوقات کار میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ اضافی سٹاپ اوورز کے باعث ائیر انڈیا جنگی بنیادوں پر کیبن کریو بھرتی کرے گی۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں