العزیزیہ، فلیگ شپ ریفرنسز: نواز شریف کی سالگرہ کے سبب فیصلہ کی تاریخ تبدیل کرنیکی استدعا مسترد

اسلام آباد (پبلک نیوز) احتساب عدالت نے العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز میں حسن نواز کی فروخت شدہ پراپرٹی سے متعلق اضافی دستاویز عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنانے کی منظوری دے دی۔

وکلائے صفائی کی طرف سے نواز شریف کی سالگرہ منانے کی ملہت پر فاضل جج نے ریمارکس دئیے کہ فیصلہ سنانا ان کا کام ہے، وکلا پریشان نہ ہوں، کام مکمل ہو گیا تو فیصلہ چوبیس دسمبر کو ہی سنا دیا جائے گا۔

نوازشریف کے وکلاء نے یو کے لینڈ رجسٹری سے تصدیق شدہ ایک اور دستاویز احتساب عدالت میں جمع کرائی۔ جج ارشد ملک کے روبرو نیب کے ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل سردار مظفرنے کہا کہ وکیل صفائی کی طرف سے شہادت مکمل ہونے کا بیان دیا جا چکا ہے۔

ڈپٹی پراسیکیوٹر نے کہا کہ کوئی قانون بتا دیں جس کے تحت یہ دستاویزاب پیش کی جاسکتی ہے۔ ملزموں کو دفاع پیش کرنے کے لیے پورا موقع دیا گیا۔ جو دستاویزات پیش کی گئیں ان کا فنانشل اسٹیٹمنٹ میں ذکر ہی نہیں۔

سردار مظفر کا کہنا تھا کہ جو دستاویزات نیب نے پیش کیں، ان کے مطابق کمپنیاں نقصان میں تھیں۔ یہ اب کمپنی کے ڈسپوزل کی دستاویزات لے آئے ہیں۔ نیب کا کیس یہ ہے کہ کمپنیاں بنائی کیسے گئیں؟

جج ارشد ملک نے ریمارکس دیئے کہ گزشتہ سماعت پر انہوں نے کہہ دیا تھا کہ دستاویزات فیصلے سے پہلے پیش کی جا سکتی ہیں۔ عدالت نے دستاویز عدالتی ریکارڈ کا حصہ بناتے ہوئے نوازشریف کی درخواست نمٹا دی۔

نواز شریف کے وکلاء نے استدعا کی کہ نوازشریف کی سالگرہ منانی ہے۔ فیصلہ کی تاریخ تبدیل کی جائے۔ جج ارشد ملک نے کہا کہ یہ ان کا کام ہے وکلاء پریشان نہ ہوں۔ اگر کام مکمل ہوگیا تو چوبیس دسمبر کو ہی فیصلہ سنائیں گے۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں