"العزیزیہ حسین نواز نے نہیں، میاں شریف نے قائم کی" نواز شریف کے مزید 30جواب جمع

اسلام آباد (پبلک نیوز) العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں نوازشریف نے مزید 30 سوالوں کے جواب جمع کرا دئیے۔ نوازشریف نے کہا کہ بچوں کے انٹرویوزاور بیانات کو بطورشہادت پیش نہیں کیا جاسکتا۔ العزیزیہ حسین نوازنہیں، میاں شریف نے قائم کی۔ کاروبار حسین نواز چلاتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے العزیزیہ ریفرنس کی سماعت کی۔ سابق وزیراعظم نے آج مزید 30 سوالات کے تحریری جوابات جمع کرا دیئے۔

نوازشریف قطری خط کے بعد آج العزیزیہ کی ملکیت سے بھی دستبردار ہو گئے۔ نہ صرف اسٹیل مل بلکہ اپنے بیٹے کے بیان سے بھی لاتعلقی کا اظہار کر دیا۔ نوازشریف نے اپنے جواب میں کہا کہ وہ  وہ العزیزیہ کی فروخت یا اس سے متعلق کسی ٹرانزکشن کا حصہ نہیں رہے۔ نہ ہی حسین نواز نے 6ملین ڈالر میں العزیزیہ کے قیام کا بیان ان کی موجودگی میں دیا۔ نوازشریف نے کہا کہ حسین نواز کا بیان ان کے لیے قابل قبول شہادت نہیں ہے۔

نوازشریف نے کہا کہ شریک ملزم حسین نوازاس عدالت کے سامنے بھی موجود نہیں ہے۔ یہ درست نہیں العزیزیہ حسین نوازنے قائم کی۔ العزیزیہ اسٹیل مل ان کے والد میاں شریف نے قائم کی تھی۔ اسٹیل مل کا کاروبار حسین نواز چلاتے تھے۔ نوازشریف نے یہ بھی کہا کہ انہوں نے ذاتی طور پر کبھی قطری خطوط پر انحصار نہیں کیا۔

سابق وزیراعظم سے سوال کیا گیا کہ جے آئی ٹی نے کہا قطری شہزادے نے کوششوں کے باوجود بیان ریکارڈ نہیں کرایا، آپ کیا کہیں گے۔ جس پر نواز شریف نے کہا کہ حمد بن جاسم نے جے آئی ٹی کو سوالنامہ فراہم کرنے کا کہا تھا۔ ان کی جانب سے یہ ایک معقول درخواست تھی تاہم جے آئی ٹی نے غیر ضروری طور پر بیان ریکارڈ کرنے کے لیے سخت شرائط رکھیں۔

نواز شریف نے کہا کہ حسن اور حسین نواز سے منسوب کوئی بیان میرے خلاف بطور شواہد پیش نہیں کیا جا سکتا اور دونوں کے انٹرویوز بطور شواہد پیش نہیں کیے جا سکتے۔

خیال رہے کہ احتساب عدالت کی جانب سے پوچھے گئے 151 میں سے 120 سوالات کے جوابات ریکارڈ کرادیئے گئے جس کے بعد عدالت نے العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کی سماعت پیر تک ملتوی کر دی۔ دوسری جانب احتساب عدالت نے ٹرائل کی مدت میں ساتویں بار توسیع کے لیے سپریم کورٹ سے رجوع کر لیا۔

احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے رجسٹرار سپریم کورٹ کو خط لکھ جس میں کہا گیا کہ سپریم کورٹ کی دی گئی ڈیڈ لائن میں ٹرائل مکمل کرنا ممکن نہیں۔ العزیزیہ میں ملزم کا بیان، فلیگ شپ میں آخری گواہ پر جرح جاری ہے، ٹرائل مکمل کرنے کے لیے مزید وقت دیا جائے۔

احمد علی کیف  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں