لاہور: پلازہ میں آتشزدگی، صاف پانی کیس کا ریکارڈ جلانے کی کوشش تھی، وزیر اطلاعات پنجاب

لاہور (پبلک نیوز) ایم ایم عالم روڈ پر واقع علی پلازہ میں آتشزدگی، زندگی کے لیے تیسری منزل سے چھلانگ لگانے والا شخص موت کی وادی میں چلا گیا۔ شعلوں اور دھویں کی زد میں آ کر درجنو ں افراد جھلس گئے۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعلیٰ شہباز شریف کے داماد علی عمران کے 14 منزلہ پلازہ کی بیسمنٹ میں مبینہ طور پر شارکٹ سرکٹ کے باعث آگ بھڑک اٹھی۔ آگ نے دیکھتے ہی دیکھتے کئی منزلوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا، عمارت میں درجنوں افراد پھس گئے اور بالکونی پر کھڑے مدد کا انتظار کرتے رہے۔

پلازہ میں پھنسے شہری عمران نے جان بچانے کے لیے تیسری منزل سے چھلانگ لگا دی، جسے شدید زخمی حالت میں ہسپتال منتقل کیا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہو سکا۔

ریسکیو ٹیمیوں نے آپریشن مکمل کر لیا۔ پلازہ سے 43 افراد کو باحفاظت نکال لیا گیا۔ ذرائع کے مطابق 43میں سے 7افراد دھوئیں سے متاثر ہوئے۔ ریسکیو نے پلازہ کے خارجی اور عقبی جانب سے ریسکیو آپریشن کو یقینی بنایا۔

وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ نیب میں علی عمران کیس موجود ہے اور خدشہ ہے چھپن کمپنیوں کا ریکارڈ جلانے کی کوشش کی گئی۔ تمام پہلوؤں سے واقعہ کی تحقیقات کی جائیں گی۔

ذرائع کے مطابق شہباز شریف کے داماد اور پلازہ مالک علی عمران نے صاف پانی کمپنی سے تین سال کا معاہدہ کیا تھا۔ اس سے قبل بھی ان عمارتوں میں آتشزدگی کے واقعات ہو چکے ہیں جہاں پنجاب حکومت کے دفاتر تھے۔ ایل ڈی اے بلڈنگ، کوآپریٹو سوسائٹی پنجاب اور رمضان شوگر ملز میں آگ لگنے سے ریکارڈ ضائع ہو گیا تھا۔

ایسی عمارتیں جہاں پنجاب حکومت یا کمپنیوں کے دفاتر موجود ہیں ان کے مکینوں کو اب محتاط رہنا ہو گا کہ وہ بھی آگ کی نظر نہ ہو جائیں۔

احمد علی کیف  1 سال پہلے

متعلقہ خبریں