تربیلا ڈیم توسیعی منصوبہ، تمام پیداواری یونٹس نے کام شروع کر دیا

اسلام آباد (پبلک نیوز) تربیلا ڈیم چوتھے توسیعی منصوبہ کے تمام پیداواری یونٹس نے کام شروع کر دیا ہے۔ تینوں یونٹس کا بیک وقت تجربہ کامیاب رہا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ پیدوار میں 46فیصد اضافہ سے بجلی کے بحران کے خاتمے کے لیے بڑا قدم ہو گا۔

تفصیلات کے مطابق تربیلا ڈیم چوتھے توسیعی منصوبہ کے تینوں پیداواری یونٹس کا آج کامیابی کے ساتھ بیک وقت لوڈ ری جیکشن ٹیسٹ کیا گیا۔ لوڈ ری جیکشن ٹیسٹ تقریباً ایک ہزار ایک سو میگاواٹ کے لوڈ پر منصوبہ کے کنسلٹنٹس اور کنٹریکٹر کی نگرانی میں کیا گیا۔

ہائیڈرو پاور منصوبوں کے بیک وقت لوڈ ری جیکشن ٹیسٹ کا مقصد زیر آب آلات کی پائیداری اور ٹربائنوں کی رفتار اور پریشر میں اضافہ کو جانچنا ہوتا ہے۔ یہ ٹیسٹ پن بجلی منصوبے کی تکمیل اور اس کے تمام پیداواری یونٹ فعال ہونے پر کیا جاتا ہے۔

تربیلا ڈیم چوتھے توسیعی منصوبہ کی ٹربائن کی کارکردگی بھی اس سے قبل جانچی گئی۔ ٹیسٹ بین الاقوامی ماہر کی نگرانی میں کیا گیا۔ ٹیسٹ کے نتائج کے مطابق ٹربائن کی کارکردگی، ماڈل ٹیسٹنگ کے دوران سامنے آنے والی کارکردگی سے بہتر پائی گئی۔

خیال رہے کہ تربیلا کے چوتھے توسیعی منصوبہ اور نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی رواں سال تکمیل سے پن بجلی کی مجموعی پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز پیک آورز کے دوران پن بجلی کی مجموعی پیداوار پانچ ہزار دو سو اکتالیس میگا واٹ رہی جو گزشتہ سال اسی روز تین ہزار پانچ سو اکاسی میگا واٹ تھی۔ گزشتہ سال کی نسبت یہ اضافہ چھیالیس فیصد ہے۔

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں