شہباز شریف دور میں قائم پبلک سیکٹر کمپنی میں کروڑوں روپے کی کرپشن کا انکشاف

لاہور(ادریس شیخ) خادم اعلیٰ کی ایک اور پبلک سیکٹر کمپنی میں کروڑوں روپے کی مبینہ کرپشن کا انکشاف،لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی میں مبینہ کرپشن سے متعلق رپورٹ پبلک ہو گئی، افسران نے قومی خزانے کو بے دردی سے نقصان پہنچایا۔

 

لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی کی رپورٹ کے مطابق آڈٹ کے بغیر ہی من پسند آپریٹرز کو 21 کروڑ 68 لاکھ روپے سبسڈی کی مد میں ادا کیے گئے، افسران نے بورڈ آف ڈائریکٹرز کی منظوری کے بغیر ہی اپنی تنخواہوں میں من پسند اضافہ کر لیا۔ ایل ٹی سی نے بس سٹاپ شیلٹرز کا ٹھیکہ دیا، ٹھیکیدار کے چیک ڈس آنر ہو گئے مگر بس سٹاپ خالی ہی نہ کروائے گئے، ٹینڈرز کے بغیر ہی ٹرانسپورٹ سروسز کا ٹھیکہ دیا گیا۔

افسران کمپنی کے فنڈز سے ذاتی گاڑیوں کیلئے پٹرول حاصل کرتے رہے۔ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ قانون کے خلاف نینشل انشورنس کمپنی کی بجائے نجی کمپنی کو نوازتے ہوئے انشورنس کروائی گئی، لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی کے افسران نے نجی ٹھیکیدار کو نوازتے ہوئے غیر قانونی طور پر جنریٹر خریدا اور من پوافراد کو نوازنے کیلئے لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی کے ملازمین کی ڈگریز کی تصدیق بھی تاحال نہ ہو سکی۔

عطاء سبحانی  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں