سینیٹ اجلاس میں بجلی کے بلوں پر نیلم جہلم سرچارج ختم کرنے کا اعلان

اسلام آباد(جمشید خان) حکومت نے نیلم جہلم سرچارج 30 جون سے ختم کرنے کا اعلان کر دیا، وزیر توانائی عمر ایوب کا کہنا ہے کہ سمندرمیں آف شور ڈرلنگ جاری ہے۔ اگلے 3 سے 4 ہفتوں میں پتہ چل جائے گا کہ تیل ہے یا گیس۔ سینیٹ اجلاس میں آزادی اظہار کے عالمی دن قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی گئی۔

 

سینیٹ اجلاس چیئرمین صادق سنجرانی کی زیرصدارت ہوا۔ وزیر پارلیمانی امور اعظم سواتی نے بجلی صارفین کے لئے اچھی خبر کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ نیلم جہلم سرچارج 30 جون سے ختم ہو جائے گا، نیلم جہلم سے اب تک 64 ارب روپے سرچارج کے طور پر وصول کئے جا چکے ہیں۔ وزارت آبی وسائل نے تحریری جواب میں کہا کہ اب تک 2400 گیگا واٹ بجلی نیلم جہلم پراجیٹ سے نیشنل گریڈ میں شامل کی جا چکی ہے۔ وفاقی وزیر برائے توانائی عمر ایوب نے وقفہ سوالات میں بتایا سمندر میں آف شور ڈرلنگ جاری ہے، 4800 میٹرڈرلنگ ہو چکی جبکہ 5 ہزار ہونی ہے، اگلے 3 سے 4 ہفتوں میں پتہ چل جائے گا کہ تیل ہے گیس۔

 

چیف جسٹس، وزیراعظم فنڈ برائے تعمیر دیامر بھاشا ڈیم اور مہمند ڈیمز کا معاملے پر وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا نے سینیٹ میں تحریری جواب جمع کروایا جس کے مطابق سپریم کورٹ کی ویب سائٹ کے مطابق 10 ارب 40 کروڑ 57 لاکھ 773 روپے بھاشا اور مہمند ڈیمز کے فنڈز میں جمع ہو چکی ہے، وزیراعظم کی جانب سے مئی کے مہینے میں اس منصوبے کا انعقاد کردیا جائے گا۔ وزیر انچارج برائے پرائم منسٹر ہاؤس کا سینیٹ میں تحریری جواب میں بتایا پاکستان سٹیزن پورٹل 28 اکتوبر 2019 کو شروع کیا گیا۔ 13 اپریل سے 6 لاکھ 20 یزار 588 شکایات موصول ہوئیں، 4 لاکھ 64 ہزار 562 شکایات حل کر دی گئیں، مجموعی طور پر 75 فیصد شکایات حل کردی گئیں۔

 

وزیر توانائی عمر ایوب خان نے سینٹ میں تحریری جواب کے ذریعے بتایا گزشتہ 10 سالوں کے دوران تیل اور گیس کے دریافت ہونے والے ذحائر کی تعداد 160 ہے،، سب سے ذیادہ ذخائر سندھ سے 131 دریافت کئے گئے. پنجاب13،خیبرپختونخوا 13 جبکہ بلوچستان سے سے 3 ذخائر دریافت ہوئے۔ قائد ایوان سینٹ شبلی فراز کی جانب سے سینٹ اجلاس میں آزادی اظہار کے عالمی دن قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی گئی۔ سینیٹ اجلاس پیر کی دوپہر دو بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں