وزیراعظم کا پاکستان کو ریاست مدینہ بنانے کی جانب ایک اور قدم

سوہاوا (پبلک نیوز)اب دنیاوی اور دینی تعلیم ساتھ ساتھ ہو گی، وزیراعظم عمران خان آج سوہاوہ میں القادر یونیورسٹی کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔ القادر یونیورسٹی پاکستان کی تاریخ میں اپنی مثال آپ ہو گی، جس کا مقصد اخلاقی، ذہنی اور روحانی طور پر ایک کامیاب انسان بننے میں مدد دینا ہو گا۔

 

خوبصورت سرسبز پہاڑوں میں گھرا، پُر فضا مقام، یہ ہے پنجاب کے ضلع جہلم کی تحصیل سوہاوا سلطنت برطانیہ کی عملداری میں آنے کے بعد 1849ء میں راولپنڈی کو ضلع بنایا گیا تو اس علاقے کو راولپنڈی میں شامل کیا گیا، 1851ء میں اسے راولپنڈی سے ضلع جہلم میں منتقل کر دیا گیا اور 1985ء میں اسے تحصیل کا درجہ دے دیا گیا۔

 

وزیراعظم عمران خان آج سوہاوا میں القادر یونیورسٹی کا سنگ بنیاد رکھ رہے ہیں، جس کے قیام سے خطہ پھوٹوہار میں تعلیم و ترقی کی راہیں ہموار ہوں گی۔ پہلی بار کسی یونیورسٹی میں سیرت النبی صلی اللہ و علیہ وآل وسلم پر ریسرچ کی جائے گی۔ 500 کنال رقبے پر مشتمل القادر یونیورسٹی کی خاص بات یہ ہے کہ یہاں صرف دنیاوی نہیں بلکہ دینی تعلیم بھی دی جائے گی۔۔ سائنس اور ٹیکنالوجی کے ساتھ ساتھ صوفی ازم بھی پڑھایا جائے گا۔

 

وزیراعظم نے معاون خصوصی زلفی بخاری نے کہا کہ اسلام و فوبیا کو ختم کرنے کے لیے یہ وقت ہے کہ دنیا کو اسلام کا صحیح مطلب سمجھایا جائے۔ زلفی بخاری نے کہا کہ ایک سال میں یونیورسٹی کا پہلا فیز مکمل کر لیا جائے گا۔ پاکستان بھر سے طلبا یہاں پڑھنے آئیں گے۔ القادر یونیورسٹی پاکستان کی تاریخ میں اپنی مثال آپ ہو گی۔ وزیراعظم نے ہمیشہ ریاست مدینہ کی بات کی۔ یہ واحد یونیورسٹی ہو گی، جہاں سیرت رسول جانی جائے گی تاکہ نئی نسل دینی اور دنیاوی تعلیم ساتھ ساتھ حاصل کر سکے۔ 

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں