بے نامی اثاثہ جات کیس میں‌شیخ روحیل اصغر کو 10 دن کی مہلت مل گئی

لاہور(مستنصرعباس) مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی شیخ روحیل اصغر بے نامی اثاثہ جات اور اربوں روپے مالیت کی سرکاری زمینوں پر قبضہ کی انکوائری میں پیش نہ ہوئے۔


شیخ روحیل اصغر بے نامی اثاثہ جات انکوائری میں آج پیش نہ ہوئے، اینٹی کرپشن لاہور ریجن کی ٹیم نے شیخ روحیل اصغر کو آج طلب کیا تھا۔ جس پر ان کے وکلاء نے اینٹی کرپشن پیش ہوکرجواب جمع کرانے کیلئے 15 جولائی تک کی مہلت مانگی, تاہم اینٹی کرپشن نے 10 دن کی مہلت دے دی۔

 

شیخ روحیل اصغر پر فرنٹ مین کے ذریعے فیکٹریاں اور بے نامی اثاثہ جات بنانے کا الزام ہے۔ شیخ روحیل اصغر پر داروغہ والا میں فرنٹ مین سن شائن سٹیل ملز،بند روڈ پر روشن سٹیل ملز قائم کرنے کا الزام ہے۔ شیخ روحیل اصغر پر خرم بٹ، ملک بودا، فیقاپٹھان، قیصر بٹ نامی فرنٹ مین کے نام پر اثاثہ جات بنانے کا الزام بھی ہے۔


شیخ روحیل اصغر پر تحصیل شالیمار موضع  دیوی پورہ میں وفاقی حکومت کے 23 کنال کمرشل رقبہ پر قبضہ کرنے کا الزام بھی ہے۔ شیخ روحیل اصغر پر ممبر بورڈ آف ریونیو وحید اختر انصاری کے غیر قانونی حکم پر 201 کنال سرکاری رقبہ اپنے نام منتقل کرانے کا بھی الزام ہے۔ دوسری جانب نیب لاہور میں غیر قانونی اثاثہ جات کا کیس بھی زیر تفتیش ہے۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں