پاکپتن اراضی کیس: نوازشریف سے اینٹی کرپشن یونٹ کی جیل میں تحقیقات

 

لاہور (مستنصر عباس) پاکپتن اراضی کیس میں سابق وزیر اعظم نواز شریف سے اینٹی کرپشن یونٹ کی ڈیڑھ گھنٹے سے زائد تحقیقات، اینٹی کرپشن کی تحقیقاتی ٹیم نے نواز شریف کا بیان ریکارڈ کیا۔

 

پاکپتن میں 8 ہزار کنال اراضی کیس میں محکمہ اینٹی کرپشن کی 3 رکنی ٹیم نے نواز شریف سے کوٹ لکھپت جیل میں تحقیقات کی۔ اینٹی کرپشن کی تحقیقاتی ٹیم نے نواز شریف کو کہا کہ بطور وزیر اعلی انہوں نے 1985 میں اوقاف کی 8 ہزار کنال اراض دیوان غلام قطب کو دی تھی۔ جس پر نواز شریف نے کہا کہ بہت پرانی بات ہے تفصیلات یاد نہیں۔

 

تحقیقاتی ٹیم نے نواز شریف سے سوال پوچھا کہ کیا الاٹمنٹ کے لیے اخبار میں اشتہار دیا تھا اور کن بنیادوں پر زمین دی گئی؟ نواز شریف نے کہا کہ کیس پرانا ہے تفصیلات یاد نہیں مگر تمام قانونی تقاضے پورے کئے تھے۔

 

نواز شریف نے تحقیقاتی ٹیم کو بتایا کہ کبھی بھی اختیارات سے تجاوز نہیں کیا، آئین و قانون کے دائرے میں رہ کر پاکستان کی خدمت کی۔ اینٹی کرپشن کی تحقیقاتی ٹیم نواز شریف سے ڈیڑھ گھنٹے سے زیادہ تحقیقات کر کے واپس روانہ ہو گئی۔

احمد علی کیف  4 ماه پہلے

متعلقہ خبریں