منی بجٹ کا آئی ایم ایف کی شرائط سے کوئی تعلق نہیں: وزیر خزانہ

اسلام آباد (پبلک نیوز) وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا ہے کہ گزشتہ حکومت سے بیرونی خسارے میں حکومت ملی۔ تاریخ میں ایسا 19ارب کا خسارہ پہلی دفعہ ہوا۔ گزشتہ حکومتوں کی پالیسیوں کی وجہ سے خسارہ اس حد تک پہنچا۔ فنانس بل کا آئی ایم ایف شرائط سے کوئی تعلق نہیں۔

وفاقی دارالحکومت میں مشیر تجارت اور وزیر مملکت حماد اظہر کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ زرمبادلہ کے ذخائر بڑی تیزی سے گر رہے تھے۔ صورتحال بہتر کرنے کے لیے جلد اقدامات کیے۔ بحران کو ختم کرنے کے لیے غیر معمولی کوششیں کیں۔ بحران سے نکالنے کے لیے دوست ممالک نے بہت مدد کی۔

اسدعمر نے کہا کہ اگلے 2ہفتوں میں مزید بہتری نظر آئے گی۔ ہمارے ملک کو اللہ تعالیٰ نے بے شمار وسائل سے نوازا ہے۔ پچھلے 30سال سے ملک کو 3خسارے رہے ہیں۔ اخراجات زیادہ ہونے کے باعث خسارہ ہوا۔ ملک میں سرمایہ کاری نہ ہونے کے باعث خسارہ ہوا۔ آئی ایم ایف کی جانب سے آج صبح بھی پیغام آیا۔ آئی ایم ایف کے پیچھے چھپنے کے بجائے ملکی معیشت کے لیے جو بہترہوا وہی فیصلہ کریں گے۔

سینئر صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیتے ہوئے وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ محصولات سے اخراجات زیادہ ہونے کے باعث بھی خسارہ ہوا۔ ہمیں صنعت اور زراعت کو فعال کرنے کی ضرورت ہے۔ کسانوں کو آسان شرائط پر قرضے دیں گے۔ ہمارے نوجوانوں کو بہترمواقع نہیں مل رہے۔ یہاں کے چھوٹے تاجروں پر سالانہ فکس ٹیکس پر ایف بی آر کو مشکل سے منایا۔ فکس شرح پر تاجروں سے مذاکرات بھی جاری ہیں۔

احمد علی کیف  7 ماه پہلے

متعلقہ خبریں