پاکستان غیور ملک، کسی کے کہنے پر گھٹنے نہیں ٹیکے گا: اسد عمر

اسلام آباد (پبلک نیوز) سابق وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا ہے کہ بلاول کو تاریخ کا نہیں پتا، ان کی جماعت کے دور میں ملک میں ترقی کی پانچ سال کی اوسط رفتار 2.8 فیصد رہی، ملکی تاریخ میں کوئی ایسی حکومت نہیں تھی جس میں معیشت کی رفتار اتنی کم ہو۔

 

سابق وزیر خزانہ اسد عمر وزارت خزانہ سے مستعفی ہونے کے بعد پہلی بار ایوان میں آئے۔ حکومتی ارکان نے ڈیسک بجا کر ان کا استقبال کیا۔ ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے سابق وزیر خزانہ اسد عمر نے پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور پی پی حکومت کے گزشتہ دور کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ ان کا کہنا تھا کہ خوشی ہے بلاول زرداری نے اردو میں تقریر کی ہے، میں نے کبھی بلاول کو غدار نہیں کہا، انہوں نے الزام لگایا کہ تحریک انصاف نے معاشی قتل کردیا ہے۔

 

اسد عمر کا کہنا تھا کہ بلاول کو تاریخ کا نہیں پتا، ان کی جماعت کے دور میں ملک میں ترقی کی پانچ سال کی اوسط رفتار 2.8 فیصد رہی، ملکی تاریخ میں کوئی ایسی حکومت نہیں تھی جس میں معیشت کی رفتار اتنی کم ہو۔

سابق وزیر خزانہ نے اس حکومت کو عوام کا احساس ہے، مہنگائی کم ہونی چاہیے اور اس کے لیے اقدامات اٹھانے چاہئیں، آج بجٹ خسارہ جس سطح پر ہے وہ نہیں ہونا چاہیے لیکن پی پی حکومت میں بجٹ کا خسارہ اوسطاً 8 فیصد تک بھی رہا اور اس سے اوپر بھی گیا۔

 

انہوں نے ملک میں مہنگائی بڑھنے کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں غربت ہے اور مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے، ہمیں اس کی فکر ہونی چاہیے، ہماری حکومت میں افراط زر 6.8 فیصد تک ہوئی جب کہ آصف زرداری کے دور میں 5 سال افراط زر کی اوسط 12.3 فیصد تھی جو 5 سال رہی، اس وقت مہنگائی کی آوازیں نہیں سنائی دیں۔

حارث افضل  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں