بجلی کے نرخوں میں 2 روپے فی یونٹ اضافہ کی منظوری

اسلام آباد (پبلک نیوز) بجلی کے نادہندگان اب اپنی خیر منائیں، تین ماہ کابل ادا نہ کیا تو میٹر کاٹ دیئے جائیں گے اور قانونی چارہ جوئی  کا بھی سامنا کرنا پڑے گا۔ اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں 480ارب کے سرکلرڈیٹ کی ادائیگیوں کا آڈٹ کرانے کا بھی فیصلہ کر لیا گیا۔ بجلی کے فی یونٹ نرخوں میں 2 روپے اضافہ کی بھی منظوری دے دی گئی۔

وزیر خزانہ اسد عمر کی زیر صدارت (اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) کا دوسرا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں بجلی کے نادہندگان کے کنکشن کاٹنے کا فیصلہ کیا گیا۔ وزیر اعظم ہاؤس سمیت جو بھی بل ادا نہیں کرے گا اس کی بجلی کاٹ دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ تین ماہ تک بل نہ دینے والے صارف کا کنکشن منقطع کر دیا جائے گا۔ جبکہ بجلی کے پری پیڈ میٹر لگانے کا بھی فیصلہ کیا گیا کہ جتنا بیلنس اتنی بجلی ملے گی۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ گردشی قرضوں کا مسئلہ وزیراعظم کے سامنے رکھنے اور سابق حکومت کی جانب سے 480 ارب روپے سرکلر ڈیٹ کی ادائیگیاں غیر تسلی بخش قرار دیتے ہوئے پورے پاور سیکٹر کا فنانشل آڈٹ کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سرکلر ڈیٹ کی ادائیگیوں میں گڑ بڑ کرنے والے ذمہ داران کا تعین اوران کے خلاف کارروائی کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

ای سی سی کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ کھادیں ایکسپورٹ کرنے کی اجازت دینے سے 15 ارب روپے منافع کمایا گیا۔ ربیع سیزن میں کھادوں کی ضرورت پوری کرنے کے لیے میکانزم تشکیل دینے کا فیصلہ کیا گیا۔ ڈومیسٹک کمپنیوں کے ذریعہ کھاد تقسیم کی جائے گی۔ ریلوے ملازمین کو پنشن کی ادائیگیوں کے لیے پنشن پلان بنانے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ گیس کی قیمتوں سے متعلق سمری ایک بار پھر مؤخر کر دی گئی۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں