پشاور: زمین کے انتقال کی بائیومیٹرک تصدیق کا آغاز شروع

پبلک نیوز: پشاور میں زمین کے انتقال کی بائیومیٹرک تصدیق کا آغاز کردیا گیا۔ بائیومیٹرک نظام عوام کے مسائل کا خاتمہ ہوگا۔ پٹواری ضلع کے 272 میں سے 67 موضع کاریکارڈ کمپیوٹر ائزڈ کر دیا گیا۔

زمین کے انتقال کی بائیو میٹرک تصدیق کا آغاز پشاور سے کر دیا گیا ہے۔ ضلعی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ بائیو میٹرک نظام سے انتقال کے نظام میں شفافیت پیدا ہو گی۔ بائیو میٹرک نظام سے عوام کو زمینی مسائل کے خاتمہ کے لیے مدد ملے گی۔ بائیو میٹرک نظام کا افتتاح کمشنر و ڈپٹی کمشنر اور دیگر انتظامی افسران نے کیا۔ تقریب میں بلدیاتی نمائندوں اور محکمہ مال کے متعلقہ افسران نے بھی شرکت کی۔

کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کو بائیو میٹرک نظام سے متعلق پریذنٹیشن بھی دی گئی۔ پٹواری ضلع کے 272 میں سے 67 موضع کا ریکارڈ کمپیوٹرز کر دیا گیا ہے۔ 23 موضع کا ریکارڈ  کمپیوٹرایز کرنے پر کام جاری ہے۔ پٹوار نظام میں جدیدیت لانے کے لیے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔ ایک انتقال میں ایک سے زائد خریداروں کا مکمل ریکارڈ کمپیوٹرایزڈ محفوظ کیا جائے گا۔ پٹواریوں کو جدید لیپ ٹاپ بھی دیے گئے ہیں۔

تحصیلدار پشاور مجاہد علی کا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ 100 سال سے زائد پرانے نظام میں تبدیلی لانے کے لیے کوشاں ہیں۔ حکمہ مال کا عملہ بھرپور تعاون کرے گا۔ بائیو میٹرک نظام کے نہ ہونے کے سبب زمینوں کے ملکیت کے تنازعات معمول بن چکے تھے۔ نئے نظام کی کامیابی کے لیے بھرپور تگ ودو د کریں گے۔

تقریب سے ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر عمران حامد شیخ کا خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ زمینوں کے انتقالات سے متعلق نظام میں بہتری لانا وقت کا اہم تقاضا ہے۔ زمین کی خرید و فروخت کرنے والے کی تصاویر بمعہ دیگر معلومات کمپیوٹرایزڈ طریقہ سے محفوظ رکھی جائے گی۔ انتقالات سے متعلق عدالتوں کے چکر اب کاٹنے نہیں پڑیگے۔

حارث افضل  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں