2030 تک ملک بھر میں 30 فیصد الیکٹرک وہیکل ہوں گی: وزیراعظم

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیراعظم کی زیرصدارت اعلیٰ سطح اجلاس، ماحولیاتی آلودگی میں کمی کرنے سے متعلق بڑے فیصلے۔ وزیر اعظم عمران خان نے الیکٹرک وہیکل پالیسی کی بھی منظوری دے دی۔

 

وزیراعظم کی زیرصدارت اعلیٰ سطح اجلاس ہوا جس میں الیکٹرک کار منصوبے، ماحولیاتی آلودگی میں کمی کرنے سے متعلق بڑے فیصلہ کیے گئے۔ اجلاس میں اس عظم کا اظہار کیا گیا کہ سال 2030 تک ملک بھر میں 30 فیصد الیکٹرک وہیکل ہوں گی۔ وزیر اعظم نے حتمی الیکٹرک وہیکل پالیسی 15 روز میں وفاقی کابینہ میں پیش کرنے کی ہدایت دیدی۔ وفاقی کابینہ پاکستان کی پہلی الیکٹرک وہیکل پالیسی کو منظوری دے گی۔ تمام کار ساز کمینیوں کو مراعات دینے کے لیے 15 روز میں پالیسی دیدی جائے گی۔ وزیر اعظم عمران خان نے الیکٹرک وہیکل پالیسی کی بھی منظوری دے دی۔

 

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس میں بلین ٹری سونامی منصوبے پر وفاقی حکومت کو بڑی کامیابی حاصل ہو گئی۔ بلین ٹری منصوبہ چاروں صوبؤں کا منصوبہ بن گیا، تمام صوبے ایک پیج پر آگئے۔ بلین ٹری سونامی منصوبے پر تمام صوبوں نے دستخط بھی کردئیے گئے۔ منصوبے کو کامیاب بنانے کے لیے تمام صوبوں نے رضامندی ظاہر کردی۔ آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان بھی بلین ٹری منصوبے میں وفاقی حکومت ہوگی۔

 

خیال رہے کہ الیکٹرک کاریں متعارف کرانے کا مقصد سموگ پر قابو پانا ہے۔ 2022 تک تمام بڑی کار کمپنیاں نصف تک بجلی کاریں بنانے کا عمل شروع کریں گی۔ بھارت اور برطانیہ سمیت متعدد ممالک سال 2022 تک 30 فیصد الیکٹرک کاریں بنائیں گے۔

حارث افضل  6 روز پہلے

متعلقہ خبریں