قومی اسمبلی میں ہاتھ ہوا، صوبائی اسمبلی کا حلف نہیں لوں گا: چودھری نثار

راولپنڈی (پبلک نیوز) سابق وزیر داخلہ چودھری نثار نے کہا ہے کہ قومی اسمبلی میں میرے ساتھ ہوا، صوبائی اسمبلی کی نشست کا حلف لیا ہے اور نہ ہی لوں گا۔ اقتدار کی خواہش نہیں، اب روزہ رکھا ہوا ہے جب افطاری ہو گی تو مزہ آئے گا۔

صوبائی اسمبلی کی نشست پر کامیاب ہونے کے باوجود حلف نہ اٹھانے کے معاملہ پر گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ شاہد خاقان عباسی چل کر میرے پاس آئے۔ میں نے حلف نہیں لیا اور نہیں لوں گا۔ میرے ساتھ قومی اسمبلی میں ہاتھ ہوا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ کل تک عمراں خان دوسری پارٹیوں پر تنقید کرتے تھے۔ اب خود چند ماہ میں ریکارڈ قرضے لے لیے ہیں۔ آگے بدتریں حالات نظر آرہے ہیں۔ پہلے 100 ڈالر سے جو ملتا تھا اب150 ڈالر میں نہیں ملتا۔ مہنگائی کیسے رکے گی کوئی فارمولا نہیں ہے۔ بڑی بیماری کا علاج ڈسپرین سے کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ اکتوبر، نومبر اور دسمبر میں جو مہنگائی ہوگی وہ عوام کی چیخیں نکال دے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ معاشی اور سماجی حالات سنگین ترین ہیں۔ اسمبلی میں لڑائی جھگڑا معمول بن چکے ہیں۔ میں اگر عمران کے ساتھ ہوتا تو مشورہ دیتا کہ ایک جگہ پر اکھٹے ہو جائیں۔ آج جتنے اتحاد کی ضرورت ہے کبھی نہیں تھی۔ موجودہ حالات دشمنوں کی مدد کرنے کے مترادف ہیں۔

چودھری نثار نے کہا کہ موجودہ حکومت بلدیاتی الیکشن کرا ہی نہیں سکتی۔ تحریک انصاف اگر مقبول جماعت ہے تو الیکشن کرا کر دیکھ لے۔ نتائج نکال لیں، دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہو جائے گا۔ انتظامی یونٹ کو مسخ کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ ضلع کونسل سرے سے غائب کر دی گئی، اس قانون پر احتجاج ہو گا۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں