'چین نے سی پیک میں سعودی عرب کی شمولیت کو خوش آئند قرار دیا'

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیر پیٹرولیم غلام سرور خان نے کہا ہے کہ حکومت نے قطر کے ساتھ ایل این جی معاہدے پر نظر ثانی کے لیے ہوم ورک مکمل کر لیا۔ وزیراعظم کے دورہ قطر کے دوران قطری حکام سے ایل این جی معاہدے پر بات ہو گی۔ میں خود بھی وزیراعظم کے ہمراہ قطر جاوں گا۔ قطر سے زیادہ سے زیادہ ریلیف لینے کی کوشش کریں گے۔

وزیر پیٹرولیم غلام سرور خان کی میڈیا سے غیر رسمی گفتگو میں کہنا تھا کہ ایل این جی معاہدے ختم نہیں ہو سکتے، دس سال بعد نظر ثانی ہو سکتی ہے۔ پرائیویٹ سیکٹر ایل این جی درآمد کرنا چاہے تو حکومت سہولیات فراہم کرے گی۔ گوادر میں سعودی عرب کی جانب سے تیسری آئل ریفائنری لگانے پر چین کے کوئی تحفظات نہیں۔ چین نے سی پیک میں سعودی عرب کی شمولیت کو خوش آئند قرار دیا ہے۔

Related image

حکومت نے قطر کے ساتھ ایل این جی معاہدے پر نظر ثانی کے لیے ہوم ورک مکمل کر لیا۔ وزیراعظم کے دورہ قطر کے دوران قطری حکام سے ایل این جی معاہدے پر بات ہو گی۔ میں خود بھی وزیراعظم کے ہمراہ قطر جاوں گا۔ قطر سے زیادہ سے زیادہ ریلیف لینے کی کوشش کریں گے۔ قطری حکام کے ساتھ ایل این جی کی قیمت میں کمی کے حوالے سے بات کریں گے۔

 

حکومت قومی مفاد کے منصوبوں میں یو ٹرن نہیں لے گی۔ عدالتیں بھی قومی مفاد کے منصوبوں میں حکم امتناع جاری نہیں کریں گی۔ سی پیک میں 70 فیصد توانائی کے منصوبے ہیں لیکن پٹرولیم کا ایک منصوبہ بھی شامل نہیں۔ ماضی کے منصوبہ جیسے بھی تھے ہم بھگت رہے ہیں۔ مینڈیٹ پانچ سال کا ہو تو پندرہ سال کے منصوبے کا معاہدہ ہو تو شکوک شبہات جنم لیتے ہیں۔

حارث افضل  6 ماه پہلے

متعلقہ خبریں