سابق ڈپٹی سیکرٹری سینیٹ ارشد ملک کیخلاف پہلی بار چیئرمین سینٹ نے ایکشن لے لیا

اسلام آباد (پبلک نیوز) کرپشن سے کروڑوں کی 45جائیدادیں، اوپر سے اختیارات کا ناجائز استعمال، سابق ڈپٹی سیکرٹری سینیٹ ارشد ملک 7برس قبل بہتی گنگا میں ہاتھ دھوتے رہے، پہلی بار پنجاب حکومت کی درخواست پر چیئرمین سینٹ نے ایکشن لے لیا۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت کی درخواست بالآخر سات سال کے بعد مالی بے ضابطگیوں، اختیارات کا ناجائز استعمال اور آمدن سے زیادہ اثاثے بنانے والے سینیٹ سیکرٹریٹ کے ڈپٹی سیکرٹری ارشد ملک کے خلاف چیئرمین سینیٹ نے ایکشن لے لیا۔ پنجاب حکومت نے پہلی مرتبہ دو ہزار گیارہ میں ارشد ملک کی مالی بے ضابطگیوں اور اختیارات کے ناجائز استعمال کی نشاندہی کی تھی۔

ارشد ملک مری میں ٹی ایم اے تھے اور سابق چیئرمین وسیم سجاد کے دور میں 2006 میں ڈیپوٹیشن پر سینیٹ سیکرٹریٹ آئے۔ دستاویز کے مطابق ارشد ملک کے خلاف انکوائری 2011 میں شروع ہوئی اور پنجاب حکومت نے ارشد ملک کے خلاف تادیبی کارروائی کے لیے سینیٹ سیکرٹریٹ سے رابطہ کیا لیکن سینیٹ سیکرٹریٹ نے کوئی کارروائی نہیں کی۔ ارشد ملک تین سال تک سابق چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی کے پرائیوٹ سیکرٹری رہے۔

پنجاب حکومت نے ایک بار پھر اکتوبر دو ہزار اٹھارہ میں سینیٹ سیکرٹریٹ کو خط لکھا اور بتایا گیا کہ مالی بے ضابطگیوں کے حوالے سے پنجاب حکومت نے ارشد ملک کے خلاف کارروائی کی ہے اور اب سینیٹ سیکرٹریٹ بھی کارروائی کرے جس کے بعد کیس کا تفصیلی جائزہ لیا گیا اور چیئرمین سینیٹ نے کارروائی کرتے ہوئے ارشد ملک کی خدمات پنجاب حکومت کو واپس کردیں دوسری جانب پنجاب حکومت نے ارشد ملک کو ملازمت سے برخاست کر دیا۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں