30 سال کی خرابیاں چند ماہ میں درست نہیں ہوسکتیں: وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار

لاہور (پبلک نیوز) وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ پنجاب اسمبلی میں مفاد عامہ کے لیے ریکارڈ قانون سازی کریں گے۔ ہم سب نے کپتان کی ٹیم بن کر صوبے کی بہتری اور عوام کی خوشحالی کے لیے کام کرنا ہے۔ اراکین اسمبلی میرے ساتھی ہیں۔

 

لاہور میں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کا تحریک انصاف اور اتحادی جماعتوں کے پارلیمانی پارٹیوں کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پنجاب اسمبلی میں مفاد عامہ کے لیے ریکارڈ قانون سازی کریں گے۔ ہم سب نے کپتان کی ٹیم بن کر صوبے کی بہتری اور عوام کی خوشحالی کے لیے کام کرنا ہے۔ اراکین اسمبلی میرے ساتھی ہیں۔ ہم صوبے کے عوام کی خدمت کے سفر میں ایک ہیں۔ پنجاب اسمبلی کے اجلاسوں کے دوران آپ نے بھرپور حصہ لیا ہے اور ہر موقع پر پارٹی کو سرخرو کیا ہے۔

 

وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا تھا کہ میرے دروازے آپ کے لیے ہمشہ وقت کھلے ہیں۔ صوبے کی ترقی و خوشحالی کے لیے کام کر رہے ہیں اور کرتے رہیں گے۔ 100 روزہ ایجنڈے کے تحت مقرر کردہ اہداف کے حصول کو یقینی بنانا ہے۔ اب کام کر کے دکھانے کا وقت ہے۔ 30 سال کی خرابیاں چند ماہ میں درست نہیں ہوسکتیں۔ سسٹم کو درست کرنے کے لیے اصلاحات لارہے ہیں۔ صوبائی وزراء کو کارکردگی میں مزید بہتری لانا ہوگی۔

 

عثمان بزدار کا کہنا تھا کہ کام کرنے والوں کو سرآنکھوں پر بیٹھائیں گے۔ میرے وزیر مکمل بااختیار ہیں۔ ماضی کی طرح اختیارات کو وزیراعلیٰ آفس میں نہیں رکھا گیا۔ پنجاب کابینہ کے اجلاس دیگر ڈویژن میں بھی منعقد کئے جائیں گے۔ کابینہ کے اجلاس ڈویژن میں منعقد کرنے سے لوگوں میں احساس محرومی دور ہوگا۔ میں نے اضلاع کے دورے بھی شروع کر دیئے ہیں۔ یہ سلسلہ مستقل طور پر جاری رہے گا۔ ہسپتالوں، تھانوں اور ترقیاتی سکیموں کو خود موقع پر جا کر دیکھوں گا۔ عوام کو ریلیف دینے کے لیے میدان میں نکلا ہوں۔

 

ان کا کہنا تھا کہ وزیر اور مشیر بھی اضلاع کے دورے کریں گے۔ ضلع کی سطح پر کمیٹیاں جلد تشکیل دے دی جائیں گی۔ اراکین اسمبلی کی مشاورت سے یہ کمیٹیاں تشکیل دی جا رہی ہیں۔ ہم نے بہترین کو آرڈینیشن کے ساتھ آگے بڑھنا ہے اور منزل کا حصول یقینی بنانا ہے۔ اراکین اسمبلی سے مشاورت کا سلسلہ جاری رہے گا۔ صوبائی وزراء اضلاع کے دوروں کے دوران اراکین اسمبلی اور کارکنوں سے ملاقات کریں گے۔ بہت جلد وہ تبدیلی آئے گی جس کا خواب ہم سب نے دیکھا ہے۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں