جعلی اکاؤنٹس کیس: وزیراعلیٰ سندھ نیب کے سوالوں کا مکمل جواب نہ دے سکے

اسلام آباد(پبلک نیوز) جعلی بینک اکاؤنٹس کیس کی تحقیقات، وزیراعلیٰ سندھ نیب کے سوالوں کا مکمل جواب نہیں دے سکے۔ وزیراعلیٰ سندھ کو جلد دوبارہ بلائے جانے کا امکان ہے۔

 

جعلی بنک اکاونٹس کیس کی تحقیقات، وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ کی گزشتہ روز نیب میں پیشی کا معاملہ، پبلک نیوز نے اندرونی کہانی پتہ کر لی۔ ذرائع کے مطابق وزیراعلی سندھ سوالوں کے مکمل جواب نہ دے سکے۔ نیب ٹیم وزیراعلی کے جوابات سے غیر مطمئن ہے۔ ذرائع کے مطابق نیب کی جانب سے وزیراعلی سندھ کو جلد دوبارہ بلائے جانے کا امکان ہے۔ وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ سے دو کیسز سے متعلق تفتیش ہوئی۔

 

ڈی جی نیب عرفان منگی نے مراد علی شاہ کا بیان خود ریکارڈ کیا۔ سندھ حکومت کی جانب سے لگائے گئے پاور پروجیکس کے متعلق سوالات پوچھے گئے۔ نیب ٹیم کی جانب سے جو سوالات پوچھے گئے، نوری آباد پاور پروجیکٹ کی منظوری کس نے دی تھی؟ منصوبے کی مالیت کیا تھی اور اضافی کتنے پیسے خرچ کیے گئے؟ منصوبہ مکمل ہونے میں کتنی تاخیر ہوئی؟ حکومت کا اس منصوبے کی تعمیر اور تاخیر سے کتنا نقصان ہوا؟ ذمہ دار کون ہیں اور ان کے خلاف کیا کوئی کارروائی ہوئی؟

 

ذرائع کے مطابق جواب میں وزیراعلی سندھ دیگر منصوبوں کا ذکر کرتے رہے، جس منصوبے سے متعلق سوالات کیے اس کے جوبات نہیں دے سکے۔ ٹھٹہ دادو شوگر ملز کی نیلامی سے متعلق مزید سوالات بھی پوچھے گئے۔ ذرائع کے مطابق وزیراعلی نے پہلی پیشی پر دیے گئے سوالنامے کا تحریری جواب بھی نیب ٹیم کے حوالے کیا۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں