امریکا نے سورج کے قریب جانے کا ریکارڈ بنایا تو چین نے اپنا ہی مصنوعی سورج بنا ڈالا

پبلک نیوز: امریکا نے سورج کے قریب ترین پہنچے کا ریکارڈ بنایا تو چین کیسے پیچھے رہ سکتا تھا، چین نے اپنا ہی مصنوعی سورج بنا ڈالا۔

چین نے لامحدود توانائی کے حصول کی کوشش کے دوران مصنوعی سورج بنانے کا دعویٰ کر دیا۔

مصنوعی سورج دراصل ایک ایٹمی ری ایکٹر ہے جو بالکل اسی انداز سے کام کرتا ہے جیسے سورج کام کرتا ہے۔ چین کے ہیفائی انسٹی ٹیوٹ آف فزیکل سائنس نے اس کا درجہ حرارت پہلی مرتبہ 10 ہزار ڈگری سینٹی گریڈ تک لے جانے میں کامیابی حاصل کی۔ یہ درجہ حرارت سورج کے مرکز سے 6 گنا زیادہ گرم ہے۔

China's Experimental Advanced Superconducting Tokamak (EAST), dubbed the

اس درجہ حرارت میں نیوکلیئر فیوژن بنتا ہے جس سے ماحول دوست توانائی اور بجلی پیدا کی جا سکتی ہے۔ دنیا بھر کے سائنسدانوں کے درمیان دنیا کا پہلا فعال نیوکلیئر فیوژن ری ایکٹر بنانے کے لیے مقابلہ جاری ہے۔

حارث افضل  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں