چین نے مسعود اظہر کیخلاف سلامتی کونسل میں بھارتی حمایت یافتہ قرار داد رکوا دی

نیویارک(پبلک نیوز) چین نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں کالعدم تنظیم جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر پر پابندی کی قرارداد ایک بار پھر رکوا دی۔ چین نے ویٹو پاور استعمال کرتے ہوئے بھارتی قرارداد مسترد کر دی۔

 

چین نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں کالعدم تنظیم جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر پر پابندی کی قرارداد ایک بار پھر رکوا دی۔ سلامتی کونسل میں کالعدم جیش محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہرکے خلاف قرارداد پراعتراض کی ڈیڈلائن ختم ہونے کا آج آخری دن تھا۔ بھارت کی درخواست پر فرانس، امریکا اور برطانیہ نے مسعود اظہر کو عالمی دہشت گرد قرار دینے کی قرارداد پیش کی تھی تاہم چین نے مسعود اظہر کے خلاف قرارداد ویٹو کر دی۔

چینی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ چین نے ہمیشہ ذمہ دارانہ رویے کا مظاہرہ کیا اور ہمیشہ مناسب مؤقف اپنایا۔ مسعود اظہر کے خلاف قرارداد پر فریقین سے رابطے میں رہے ہیں، تاہم ہمارا مؤقف ہے کہ اس مسئلے پرمتعلقہ اداروں کو قوانین اور طریقہ کار کی پیروی کرنی ہو گی اور تمام فریقین کے لیے قابل قبول حل مسئلے کامناسب حل ہو گا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں مسعود اظہر پر پابندی کی قرارداد 27 فروری کو فرانس، برطانیہ اور امریکا نے پیش کی تھی۔ چین اس سے پہلے 3 بار مسعود اظہر کو دہشت گرد قرار دینے کی کوشش ناکام بنا چکا ہے۔

عطاء سبحانی  5 روز پہلے

متعلقہ خبریں