ججز پر تنقید اور طاقتور کا طعنہ ہمیں نہ دیں، چیف جسٹس پاکستان

اسلام آباد (پبلک نیوز) چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا ہے کہ ججز پر تنقید اور طاقتور کا طعنہ ہمیں نہ دیں، کسی کو بھی باہر جانے کی اجازت وزیراعظم نے دی تھی، ہائی کورٹ نے صرف جزویات طے کیں، کہا ہمارے سامنے طاقتور صرف قانون ہے۔

 

چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ کا وزیراعظم کا عدلیہ سے متعلق بیان پر جواب آ گیا، ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے جس کیس کی بات کی وہ ابھی زیرالتواء ہے اس لیے اس پر بات نہیں کروں گا۔ وزیراعظم نے خود باہر جانے کی اجازت دی تھی، ہائی کورٹ نے صرف جزویات طے کیں۔

 

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ججز پر تنقید اور طاقتور کا طعنہ ہمیں نہ دیں۔ ہمارے سامنے طاقتور صرف قانون ہے۔ ایک وزیراعظم کو ہم نے سزا دی، دوسرے کو نااہل کیا۔ سابق آرمی چیف کے مقدمے کا فیصلہ ہونے جا رہا ہے۔ ججز پر اعتراض کرنے والے تھوڑی احتیاط کریں۔

 

ان کا کہنا تھا کہ محترم وزیراعظم نے دو دن پہلے خوش آئند اعلان کیا کہ عدلیہ کو وسائل دیں گے۔ وزیراعظم جب وسائل دیں گے تو مزید اچھے نتائج بھی سامنے آئیں گے۔

 

چیف جسٹس نے کہا کہ ہم نے ماڈل کورٹس بنائیں، مگر کوئی ڈھنڈورا نہیں پیٹا، اشتہار نہیں لگوایا، عدالیہ میں خاموش انقلاب آیا ہے اور موجودہ وسائل میں ہی یہ سب اقدامات کیے۔ سرکار سے ایک آنا نہیں مانگا۔ عدلیہ اپنا کام پوری دیانت داری اور فرض سمجھ کر رہی ہے، ججز اور عدلیہ کی حوصلہ افزائی کریں۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں