چیف جسٹس نے بلاؤل بھٹو زرداری کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دے دیا

اسلام آباد(پبلک نیوز) چیئرمین پیپلزپارٹی بلاؤل بھٹو زرداری کا نام جے آئی ٹی کی فہرست میں کیوں شامل کیا گیا؟ ان کا جعلی اکئونٹس کے معاملے سے کیا لینا دینا؟ جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دئیے ہیں کہ چیئرمین پیپلزپارٹی تو اپنی والدہ کا مشن آگے بڑھا رہے ہیں۔

 

سپریم کورٹ میں جعلی بینک اکاؤنٹس کیس سماعت ہوئی، چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے عدالت کے کمرہ نمبر1 میں سماعت کی، چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کا نام جے آئی ٹی کی فہرست میں کیوں شامل کیا گیا؟ چیف جسٹس کے سوالات، بلاول بھٹو زرداری کو جے آئی ٹی نے کیوں ملوث کیا؟ کیا جے آئی ٹی نے بدنام کرنے یا کسی کے حکم پر بلاؤل کا نام شامل کیا ہے؟

 

چیف جسٹس نے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری تو معصوم ہیں، انہوں نے کیا کیا ہے؟ بلاول تو پاکستان آکر اپنی والدہ کی مشن کو آگے بڑھا رہے ہیں۔ چیف جسٹس پاکستان نے استفسار کیا کہ جے آئی ٹی نے بلاول بھٹو اور وزیر اعلی مراد علی شاہ کے نام کیوں ای سی ایل میں ڈالے۔ اس پر جے آئی ٹی کے وکیل نے جواب دیا کہ اس پر عدالت کو مطئمن کروں گا۔ چیف جسٹس کا کہناتھا کہ172 لوگوں کے نام کابینہ دیکھ لے گی۔ نیب کو بار بار کہہ رہا ہوں کہ لوگوں کی عزت نفس بہت اہم ہے۔

 

بینچ میں شامل جسٹس فیصل عرب نے بلاول بھٹو زرداری کے جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں کردار سے متعلق سوال کیا، کیا بلاؤل کا اپنا کوئی کردار ہے؟ جس پرچیف جسٹس بولے بلاؤل کا کوئی کردار کوئی نہیں ہے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ عدالت جے آئی ٹی رپورٹ کی پابند نہیں، جرم بنتا ہے یا نہیں فیصلہ عدالت کرے گی۔ چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثار نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں بلاول بھٹو اور وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دے دیا۔

عطاء سبحانی  5 ماه پہلے

متعلقہ خبریں