چودھری پرویز الہٰی کلین چٹ چاہتے ہیں تا کہ نیب انہیں نہ بلوائے: چیف جسٹس

راولپنڈی (امجد بھٹی) بحریہ ٹاؤن راولپنڈی کے لیے محکمہ جنگلات کی زمین پر قبضہ سے کیس میں سپریم کورٹ نے عدالتی آبزرویشن کے خلاف پرویز الہٰی کی درخواست خارج کر دی ہے۔ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دئیے ہیں کہ چودھری پرویز الہی کلین چٹ چاہتے ہیں تا کہ نیب انہیں نہ بلوائے۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں بحریہ ٹاؤن راولپنڈی کے لیے محکمہ جنگلات کی زمین پر قبضہ سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ بحریہ ٹاؤن مرکزی کیس کے فیصلہ میں اس وقت کے وزیراعلیٰ پرویز الہٰی کے ملوث ہونے کا ذکر ہے۔ چودھری پرویز الہٰی کے وکیل امان اللہ کنرانی کا کہنا تھا کہ ان کے مؤکل کا مؤقف نہیں سنا گیا۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دئیے کہ ان کے مؤکل کو کوئی سزا نہیں دی گئی۔ درخواست میں یہ وجہ بھی نہیں بتائی گئی کہ عدالتی ریمارکس کیوں حذف کیے جائیں؟

جسٹس اعجاز الاحسن نے واضح کیا کہ بحریہ ٹاؤن کو الاٹ زمین سے چودھری خاندان کو زمین منتقل ہوئی۔ ان دونوں باتوں سے انکار نہیں کیا گیا۔ چودھری پرویز الہٰی کے وکیل کا کہنا تھا کہ ان کے مؤکل نے زمین چودھری منیر سے خریدی تھی جو ان کا ہی ملازم ہے۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ چودھری خاندان کا معاملہ اس بات پر نیب کو نہیں بھیجا گیا۔ آپ چاہتے ہیں ہم آپ کو کلین چٹ دے دیں تاکہ نیب آپ کو نہ بلائے۔ عدالت نے اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہٰی کی عدالتی آبزرویشن کے خلاف درخواست خارج کر دی ہے۔

احمد علی کیف  5 ماه پہلے

متعلقہ خبریں