اینٹی کرپشن کھوکھرپیلس سے قبضہ ختم کروا کر10دن میں رپورٹ پیش کرے:چیف جسٹس

لاہور(پبلک نیوز) کھوکھرپیلس خالی کریں، سامان اٹھالیں، سپریم کورٹ کا اینٹی کرپشن کو 10 دن میں قبضے ختم کرانے کا حکم، 40کنال پر کھوکھربرادران کا قبضہ ہے، پاکستان میں بدمعاشی نہیں چلنے دوں گا، چیف جسٹس کے ریمارکس۔

 

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے کھوکھر برادران کی طرف سے شہریوں کی جائیدادوں پر قبضوں کیخلاف کیس کی سماعت کی، ڈی جی اینٹی کرپشن کی جانب سے کھوکھر برادران کی جائیداد بارے رپورٹ جمع کرا دی۔ ڈی جی اینٹی کرپشن نے اپنا مؤقف بیان کرتے ہوئے عدالت آگاہ کیا کہ کھوکھربرادران نے آپ کی ریٹائرمنٹ تک ضمانت کروا رکھی ہے، انہیں یہ تاثر ہے کہ آپ کی ریٹائرمنٹ کے بعد انہیں کوئی بھی نہیں پوچھے گا۔

متعلقہ خبر:کھوکھر برادران کیخلاف اربوں روپے کے اثاثوں کی تحقیقات میں اہم پیش رفت

چیف جسٹس ثاقب نثار جس پر ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ہم مشترکہ کھاتہ توڑ رہے ہیں اور کھوکھر پیلس خالی کریں اور اپنا سارا سامان اٹھا لیں، چیف جسٹس نے کہا کہ کھوکھر پیلس خالی کروا کر اس میں کوئی تعلیمی ادارہ قائم کروا دیتے ہیں۔ کھوکھر برادران کی مرضی کے خلاف وہاں مکھی بھی پر نہیں مار سکتی، ایسے لوگوں نے پاکستان کو تباہ کر دیا ہے۔ پاکستان میں یہ بدمعاشی نہیں چلنے نہیں دوں گا۔

 

چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ یہ جو آنکھیں جھکائے کھڑے ہیں مجھے پتہ ہے بعد میں انہوں نے میرے ساتھ کیا کرنا ہے۔ اینٹی کرپشن مقدم درج کرے اور قانون کے مطابق کارروائی کرے۔ جس پر کھوکھر برادران وکیل نے کہا کہ ہم بے قصورہیں۔ قبضوں کے کلچر کی وجہ سے سارا الزام ہم پر آ رہا ہے، چیف جسٹس پاکستان نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ قبضے کا کلچر کھوکھر برادران نے ہی متعارف کروایا ہے۔ اینٹی کرپشن کھوکھر پیلس سے قبضہ ختم کروا کر10 دن میں رپورٹ پیش کرے۔ اینٹی کرپشن کو رپورٹ کی روشنی میں کارروائی کا کرنے کا حکم دے دیا۔

عطاء سبحانی  5 ماه پہلے

متعلقہ خبریں