چوہدری پرویزالہیٰ، جہانگیرترین میں ملاقات کی آڈیو لیک ہونے پر ہل چل مچ گئی

لاہور(پبلک نیوز) چودھری پرویزالہیٰ اور جہانگیر ترین میں ہونے والی ملاقات کی آڈیو لیک ہونے سے میڈیا اور سیاسی حلقوں میں ہل چل مچ گئی۔ پرویزالٰہی اورطارق بشیر چیمہ نےجہانگیرترین سے شکوہ کیا۔ چودھری سرور وزیراعلیٰ عثمان بزدار کو چلنے نہیں دیں گے۔ وزیراعظم نے واقعہ کا نوٹس لیا۔ چودھری سروراور عثمان بزدار کوآمنے سامنے بٹھا دیا۔

 

چوہدری پرویزالہیٰ اور جہانگیرترین میں ملاقات کی آڈیو لیک ہونے سے میڈیا اور سیاسی حلقوں میں ہل چل مچ گئی۔ لاہور میں تقریب سے خطاب میں وزیراعظم نے عثمان بزدار کی وزیراعلیٰ تقرری کا دفاع کیا ہی تھا، کہ کچھ دیر بعد یہ فوٹیج متنازعہ آڈیو کے ساتھ پبلک ہو گئی۔

متعلقہ خبر:"چودھری سرور کو کنٹرول کریں" وفاقی وزیر کی جہانگیر ترین سے شکایت

طارق بشیر چیمہ نے چودھری سرور کی حلقے میں مداخلت کا شکوہ کیا اور انہوں نے کہا کہ چودھری سرور عثمان بزدار کو چلنے نہیں دیں گے۔ پرویزالہیٰ نے بھی ہاں میں ہاں ملائی۔ بعد میں چودھری پرویز الہیٰ نے وضاحت دی کہ چودھری سرور سے اچھے تعلقات ہیں۔ گلہ کرنے کا مقصد شکایت دور کرنا ہوتا ہے۔

 

معاملے پر وزیراعظم کو نوٹس لینا پڑا۔ ایوان وزیراعلیٰ میں عمران خان سے چودھری سرور کی ملاقات ہوئی، جس میں وزیراعلیٰ عثمان بزدار اور جہانگیرترین بھی موجود تھے۔ وزیراعظم نے چودھری سرور اور عثمان بزدار کو آمنے سامنے بیٹھا دیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ ایک دوسرے کے خلاف کوئی تحفظات ہیں تو سامنے بات کریں۔  ٹیم کی طرح چلیں، ورنہ حکومت کو نقصان ہو گا۔ چودھری سرور نے وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کو پنجاب میں اپنا کپتان قرار دے دیا۔

 

عطاء سبحانی  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں