سابق پنجاب حکومت میں محکمہ صحت میں اربوں روپے کی کرپشن کا انکشاف

لاہور (پبلک نیوز) مسیحائی کا محکمہ بھی کرپشن کے داغ سے نہ بچ سکا۔ محکمہ صحت پنجاب میں اربوں روپے کی کرپشن کا انکشاف ہوا ہے۔ سابق پنجاب حکومت کا ایک اور بڑا اسکینڈل منطر عام پر آ گیا۔ محکمہ صحت کے کرپٹ افسران نے ٹھیکیداروں کے ساتھ ملی بھگت کرکے قومی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچایا۔

 

مسیحائی کا محکمہ بھی کرپشن کے داغ سے نہ بچ سکا۔ محکمہ صحت پنجاب میں اربوں روپے کی کرپشن کا انکشاف ہوا ہے۔ سابق پنجاب حکومت کا ایک اور بڑا اسکینڈل منطر عام پر آ گیا۔ محکمہ صحت کے کرپٹ افسران نے ٹھیکیداروں کے ساتھ ملی بھگت کرکے قومی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچایا۔

 

تفصیلات کے مطابق صوبے بھر کے تمام ڈی ایچ کیوز اور ٹی ایچ کیوز کے لیے مہنگا ترین سامان خریدا گیا۔ ہسپتالوں کے بیڈ مارکیٹ ریٹ سے 41500 روپے زاید قیمت پر خریدے گئے۔ محکمہ صحت کے افسران نے پرائیویٹ ٹھیکیداروں سے ملی بھگت کرکے 17ہزار 500 روپے کا بیڈ 59 ہزار میں خرید کر قومی خزانے کو ایک ارب روپے سے زائد رقم کا نقصان پہنچایا۔

 

ذرائع کے مطبق 360 روپے کی بیڈ شیٹ 1050 روپے میں، مہنگے آؤٹ ڈور ٹکٹس 595 روپے فی ایویڈنس کٹس بھی مہنگی خریدی گئیں۔ ایویڈنس کٹس کی خریداری میں 17 کروڑ روپے سے زائد اور آؤٹ ڈور ٹکٹس کے ٹھیکے میں  2 ارب روپے کا چونا لگایا گیا۔

 

کرپٹ افسران نے او پی ڈی ٹکٹس کی چھپائی کے بغیر ہی منظور نظر ٹھیکیداروں کو ادائیگیاں کر دیں۔ سابق پنجاب حکومت نے صوبے بھر کے ٹی ایچ کیوز اور ڈی ایچ کیوز کی تشکیل نو کے ٹھیکوں میں بھی کرپشن کی۔ سستا ترین دستیاب ہونے والا سنگل بیڈ کمبل 8 ہزار روپے میں خریدا گیا۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں