عدالت کا پولیس کو لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق مزید کارروائی کی ہدایت

کراچی(پبلک نیوز) سندھ ہائیکورٹ نے لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں پر پولیس کو لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق مزید کارروائی کرنے کی ہدایت کر دی۔ عدالت نے کے پی کے حکومت سے لاپتہ اور بازیاب ہونے والے افراد کی فہرست طلب کرتے ہوئے اے آئی جی لیگل کو ہر جمعرات کو عدالت میں رپورٹ کے ساتھ پیش ہونے کا حکم دے دیا۔

 

سندھ ہائیکورٹ میں لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں پر سماعت۔ لاپتہ افراد کی بازیابی کا سلسلہ جاری، پولیس نے رپورٹ عدالت میں جمع کرا دی۔ رپورٹ کے مطابق دو ہفتوں میں 10 لاپتہ افراد بازیاب ہو چکے ہیں۔ ملیر سے لاپتہ تین افراد بازیاب ہوئے، دیگر تھانوں کی حدود سے بھی لاپتہ افراد بازیاب ہوئے۔

 

دوران سماعت لاپتہ نوجوان کی والدہ کی دہائیاں۔ والدہ نے موقف پیش کیا میرا بیٹا گزشتہ دو سال سے لاپتہ ہے، جبکہ وکیل کا کہنا تھاکہ میرا موکل محمد شفیع دو سال سے لاپتہ تھا، پولیس عدالت کو گمراہ کرتی رہی، ہم نے خود سراغ لگایا تو علم ہوا سی ٹی ڈی نے میرے موکل کو پولیس مقابلہ میں مار دیا۔

 

جسٹس نعمت اللہ نے ریمارکس دئیے ہم کوشش کر رہیں، لاپتہ افراد کے لواحقین کے غموں کا احساس ہے حوصلہ رکھیں،جسٹس کے کے آغا نے پولیس افسران سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ پولیس کچھ کار کردگی دیکھائے ایسے آکر حاضری مت لگا کر جائیں۔ عدالت نے اے آئی جی پولیس کو آئندہ سماعت پر طلب کرتے ہوئے پولیس سمیت دیگر متعلقہ اداروں سے 13 دسمبر تک جواب طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔

عطاء سبحانی  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں