وزیر اعظم نے سانحہ ساہیوال پر جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دے دیا

لاہور(مرزا رمضان بیگ) سانحہ ساہیوال کی تحقیقات میں نیا موڑ، مقتول خلیل اور دہشت گرد قرار دیے گئے ذیشان کے اہل خانہ کا سانحہ ساہیوال کی تحقیقات کے لئے جوڈیشل کمیشن بنائے جانے پر اطمینان کا اظہار، جبکہ سی ٹی ڈی میں کھلبلی مچ گئی۔

 

وزیراعظم عمران خان نے سانحہ ساہیوال کی تحقیقات کے لئے جوڈیشل کمیشن بنانے کی یقین دہانی کرا دی، جوڈیشل کمیشن کی تشکیل پر مقتول خلیل اور دہشت گرد قرار دئیے جانے والے ذیشان کے اہل خانہ نے اطمینان کا اظہار کیا ہے، ذیشان کی والدہ نے کہا کہ اب ان کو انصاف کی امید ہے۔ دوسری جانب وزیر اعظم کے اس اعلان سے سی ٹی ڈی میں کھلبلی مچ گئی ہے، قانونی ماہرین کے مطابق واقعہ میں سی ٹی ڈی اہلکاروں کی غفلت کے ثبوت موجود ہیں۔

فرانزک ایجنسی نے سی ٹی ڈی اہلکاروں کی غفلت اور گمراہی کے کئی ثبوت جے آئی ٹی کو فراہم کئے، فرانزک رپورٹ کے مطابق واقعہ میں استعمال ہونے والے اسلحہ تبدیل کیا گیا، سی ٹی ڈی کے آڈیو کنٹرول ریکارڈ میں بھی ردبدل کی گئی، جبکہ جائے وقوعہ سے تمام شواہد ختم کئے گئے۔ سی ٹی ڈی اہلکاروں کا ذیشان کی جانب سے فائرنگ کے مؤقف کو بھی رد کیا گیا۔

 

قانونی ماہرین کے مطابق جوڈیشل کمیشن کی تحقیقات میں سی ٹی ڈی کی مجرمانہ غفلت سامنے آجائے گی اور اس کیس میں سی ٹی ڈی اہلکاروں کو سزا بھی ہو سکتی ہے۔ قانونی ماہرین کے مطابق واقعہ میں سی ٹی ڈی اہلکاروں کی مجرمانہ غفلت کے ثبوت موجود ہیں اس لئے جوڈیشل کمیشن نے تحقیقات کی تو سی ٹی ڈی اہلکاروں کو سزا ہوسکتی ہے۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں