ریسٹورنٹ میں 2 بچوں کی ہلاکت کا کیس، ملزمان کی مقامی عدالت میں پیشی

کراچی (پبلک نیوز) شہر قائد کے ریسٹورنٹ میں 2 بچوں کی ہلاکت کے معاملا پر سندھ حکومت نے ڈنڈا آٹھا لیا۔ مشیراطلاعات مرتضی وہاب نے تمام ریسٹورنٹ کو انتباہ کیا ہے کہ اپنے کھانوں کا میعار ٹھیک کرلیں ورنہ ان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔ جبکہ بچوں کی ہلاکت کے معاملے میں ملزمان کو مقامی عدالت میں پیش کردیا۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہیں بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا کہ کلفٹن کے ریسٹورنٹ میں ناقص اجزاء کے استعمال سے 2 بچوں کی ہلاکت ہوئی۔

مشیر اطلاعات سندھ کا کہنا تھا کہ ناقص اجزاء اور غیر میعاری اشیاء سے تیار کیے گئے کھانوں کے تمام ریسٹورنٹ کو بند کردیا جائے گا۔ مالکان کے خلاف بھی کاروائی کی جائے گی۔

مرتضی وہاب نے وفاقی حکومت پر الزام عائد کیا کہ سندھ حکومت ختم کرنے کے لیے سازشیں کی جاری ہے۔ جبکہ مشیراطلاعات سندھ نے وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ کے لگائے گئے الزامات کی تردید کردی۔

دوسری جانب کراچی کی مقامی عدالت میں زہریلا  کھانا کھانے سے بچوں کی ہلاکت کے ملزمان ایری زونا کے مینیجر عدنان علی اور سسٹر کمپنی اسٹریم ٹریڈنگ کے جنرل مینیجر عامر شیخ کو پیش کیا۔

عدالت میں تفتشی افسر نے کہا کہ مقدمہ کے مفرور ملزمان کو گرفتار کرنا ہے۔ مفرور ملزمان میں انور، کامران، تجمل، ایڈمن مینیجر اشرف اور شیف عابد شامل ہیں۔ جبکہ عدالت میں ایری زونا کے مینیجر کا کہنا تھا کہ وقوعہ والے روز میری اس ہوٹل میں ڈیوٹی نہیں تھی میں وہاں موجود ہی نہیں تھا۔

عدالت نے تفتیشی آفیسر کی استدعا پر ملزمان کا 3 دن تک جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا اور آئندہ سماعت پر پروگریس رپورٹ پیش کرنے کا حکم بھی دے دیا۔

حارث افضل  6 ماه پہلے

متعلقہ خبریں