سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس،پہلی جے آئی ٹی ممبران کے بیانات ریکارڈ کرنے کا فیصلہ

لاہور(پبلک نیوز) سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس کی تحقیقات میں نیا موڑ، پنجاب حکومت نے نئی جے آئی ٹی میں پنجاب پولیس ، آئی بی اور آئی ایس آئی کے افسران کو شامل کرنے کا فیصلہ کرلیا، مقدمہ میں نامزد سیاسی شخصیات اور پولیس افسران سمیت پہلی جے آئی ٹی کے ممبران کے بیانات بھی ریکارڈ کئے جائیں گے۔

 

نیوز ذرائع کے مطابق پنجاب حکومت کا کہنا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقات کے لئے پانامہ طرز کی نئی جے آئی ٹی بنائی جائے گی، مشترکہ تحقیقاتی ٹیم میں پولیس،آئی بی اور آئی ایس آئی کے افسران کو شامل کیا جائے گا، جبکہ مقدمہ میں نامزد سیاسی شخصیات اور پولیس افسران سمیت پہلی جے آئی ٹی کے ممبران کے بیانات بھی ریکارڈ کئے جائیں گے۔

متعلقہ خبر:سانحہ ماڈل ٹاؤن کی از سر نو تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی بنانے کا فیصلہ

ذرائع کے مطابق نئی جے آئی ٹی کی تشکیل کا مقصد پتہ لگانا ہے کہ آپریشن کا حکم کس نے دیا اور گولی کس کے حکم پر چلائی گئی، جبکہ سابق پنجاب حکومت اور ان کے وفادار اعلیٰ پولیس افسران نے سر جوڑ لئے اور فیصلہ کیا ہے کہ کسی صورت ڈاکٹر طاہر القادری کے مؤقف کو سچ ثابت نہیں ہونے دیا جائے گا۔ واقعہ میں ملوث بعض اعلیٰ پولیس افسران نے سابق پنجاب حکومت پر واضح کر دیا ہے کہ اب وہ حقائق کو مزید نہیں چھپا سکتے۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں