بالاکوٹ میں ایک اینٹ تک نہیں اکھاڑ سکا: ڈی جی آئی ایس پی آر

راولپنڈی (پبلک نیوز) ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ کشیدگی میں کمی آئی ہے لیکن جنگ کاخطرہ ابھی بھی ہے، بال بھارت کی کورٹ میں ہے،اب بھارت پر منحصرہے امن چاہتا ہے یاسیاسی مفاد کیلئے خطے میں بگاڑ۔

 

ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور کا غیر ملکی ٹی وی چینل سی این این سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر کو بھرپور انداز میں اجاگر کیا گیا۔ مسئلہ کشمیر خطے کے استحکام کے لیے فلیش پوائنٹ بن چکا ہے۔ خطے میں استحکام کے لیے مسئلہ کشمیر کا حل ضروری ہے۔ الزامات لگانے کے بجائے بھارت اپنے گریبان میں جھانکے۔ بھارت کشمیریوں کو دبائے گا، خواتین کی عصمت دری کرے گا اور پیلٹ گنز استعمال ہوں گی تو ردعمل ہو گا۔

 

میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ ریاستی جبر، عصمت دری اور پیلٹ گنز، یہ سب یو این ایچ سی آر کی رپورٹ کہہ رہی ہے۔ بال اب بھارت کے کورٹ میں ہے۔ بھارت اگر کشیدگی بڑھانا چاہتا ہے تو یہ خطے کے لیے اچھا نہیں ہو گا۔ پائلٹ رہا کر کے پاکستان نے امن پسندی کا ثبوت دیا۔ اب بھارت پر منحصر ہے کہ وہ امن چاہتا ہے یا داخلی فوائد کے لیے کشیدگی۔ عالمی برادری پاکستان پر الزام لگانے کے بجائے مدد کرے۔

 

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا پاکستان کسی کے دبائو پر اقدامات نہیں کررہا۔ بالاکوٹ میں ایک اینٹ تک نہیں اکھڑی۔ پلوامہ حملے میں پاکستان کا کوئی ہاتھ نہیں تھا لیکن اس کے باجود وزیراعظم نے تحقیقات کی پیشکش کی۔ اب بھارت کی جانب سے ڈوزیئر ملا، اس پر تحقیقات جاری ہیں۔ ڈوزیئر کو متعلقہ وزارت دیکھ رہی ہے۔ کوئی ملوث ہوا تو اس کے خلاف کارروائی ہو گی۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں