پارلیمنٹ، وزیر اعظم ہاؤس اور ایوان صدر بجلی کے بلوں کے نادہندہ نکلے

اسلام آباد (پبلک نیوز) بڑے اور چھوٹے بجلی نادہندگان میں فرق کیا جانے لگا۔ غریب کا کنکشن فوری منقطع اور با اثروں کی بجلی بحال رکھی جاتی ہے۔ وزیر اعظم سیکریٹریٹ، وزیر اعظم ہاوس اور ایوان صدر بجلی کے بلوں کے نادہندہ نکلے۔

 

بڑے اور چھوٹے بجلی نادہندگان میں فرق کیا جانے لگا۔ غریب کا کنکشن فوری منقطع اور با اثروں کی بجلی بحال رکھی جاتی ہے۔ وزیر اعظم سیکریٹریٹ، وزیر اعظم ہاوس اور ایوان صدر بجلی کے بلوں کے نادہندہ نکلے۔ پارلیمنٹ ہاوس، وزارت خزانہ اور توانائی بھی بجلی کے بلوں کے نادہندہ ہیں۔

 

بلوں کاپی پبلک نیوز کو موصول ہو گئی ہے جس کے تحت وزیر اعظم سیکریٹریٹ بجلی کے بلوں کا 4 کروڑ 74 لاکھ روپے کا نادہندہ ہے۔ وزیر اعظم ہاوس نے 61 لاکھ روپے کا بل ادا نہیں کیا۔ ایوان صدر 81 لاکھ 61 ہزار روپے بجلی کے بقایا جات ادا کرنے ہیں۔ پارلیمنٹ ہاوس 5 لاکھ 60 ہزار روپے کا نادہندہ ہے۔ سپیکر ہاؤس بجلی کے بل کی مد میں 91 ہزار روپے سے زائد کا نادہندہ ہے۔

رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ نے 85 ہزار، رجسٹرار شریعت کورٹ نے 80 ہزار روپے ادا کرنے ہیں۔ وزارت خزانہ بجلی بلوں کی مد میں  31 لاکھ روپے کی نادہندہ ہے۔ دوسروں سے ریکوری کرنے والی وزارت توانائی، تجارت 53 لاکھ روپے کا نادہندہ ہیں۔

 

حارث افضل  6 ماه پہلے

متعلقہ خبریں