تونسہ میں چڑیا گھر کی تعمیر کیلئے مختص اراضی پر مبینہ کرپشن کا انکشاف

لاہور(پبلک نیوز) وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے علاقے میں چڑیا گھر کی تعمیر سے متعلق رپورٹ نے گڈ گورنینس کا بھانڈا پھوڑ دیا، مبینہ کرپشن ناقص تعمیر، بجٹ کے ضیاع اور انتظامی نااہلی عروج پر ہے۔

پبلک نیوز کو موصول ہونے والی دستاویزات کے مطابق تونسہ میں چڑیا گھر کیلئے پرندے اور جانور کاغذات میں ہی خریدے گئے، پرندوں کے پنجروں کیلئے تعمیر 25سو مربع فٹ، اخراجات 25ہزار کے ظاہر کیے گئے۔ تونسہ میں چڑیا گھر کی تعمیر میں ناقص میٹیریل کا جابجا استعمال بھی سامنے آیا ہے۔

دستاویزات کے مطابق تعمیر میں نہ تو حفاظتی انتظامات کیے گئے اور نہ حفظان صحت کے اصولوں کا خیال رکھا گیا۔ پینے کا پانی تک نایاب ہے۔ قیمتی سامان لاوارث پڑا ہوا ہے۔ افسران کی نااہلی کی وجہ سے 500 کنال کی بجائے 400 کنال اراضی پر تعمیر شروع ہوئی۔

انتظامی نااہلی اور مبینہ کرپشن کی وجہ سے داخلی اور خارجی گیٹ، خارجی دیوار، پنجروں کے دروازے اور رہائشی بلاک تاحال نامکمل ہیں۔ جھاڑیاں، گھاس ہٹائی نہ جا سکیں، زمین بھی ہموار نہ ہو سکی، تعمیر کا سامان کھلے آسمان تلے گلنے سڑنے لگا، ٹربائن بھی نصب نہ ہو سکے۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں