ڈونلڈ ٹرمپ کا طالبان کیساتھ امن مذاکرات منسوخ کرنے کا اعلان

 

پبلک نیوز: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ آج رات طالبان رہنماؤں اور افغان صدر کے ساتھ الگ الگ ملاقاتیں ہونی تھیں۔ طالبان رہنماؤں کے ساتھ خفیہ ملاقات بھی طے تھی جو منسوخ کرتا ہوں۔ دباؤ ڈالنے کے لیے طالبان نے کابل میں حملے کی ذمہ داری قبول کی لیکن وہ ایسا نہیں کر پائے بلکہ خود ہی اپنی پوزیشن خراب کر لی۔

 

تفصیلات کے مطابق اپنے ٹویٹر پیغام میں ان کا کہنا تھا طالبان سے مذاکرات کابل حملے کے بعد منسوخ کیے جس میں ایک امریکی فوجی سمیت 12 افراد ہلاک ہوئے۔ افغان صدر اور طالبان رہنما آج رات امریکا پہنچ رہے تھے۔ اتوار کو ان سے خفیہ طور پر الگ الگ ملاقاتیں ہونا تھیں۔

 

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ طالبان جنگ بندی نہیں کر سکتے تو انہیں مذاکرات کا بھی کوئی حق نہیں۔ جھوٹے مفاد کے لیے طالبان نے کابل حملے کی ذمےداری قبول کی۔ یہ کیسے لوگ ہیں جو بارگیننگ پوزیشن مضبوط کرنے کے لیے لوگوں کو قتل کرتے ہیں۔ افغان طالبان کتنی دہائیوں تک جنگ لڑنا چاہتے ہیں۔

واضح رہے کہ امریکا اور طالبان کے درمیان جاری مذاکرات میں امن معاہدے پر دستخط کے فوراَ بعد بین الافغان مذاکرات شروع ہونا تھے جن میں جنگ بندی، افغانستان کے مستقبل کے سیاسی نظام، آئینی ترمیم، حکومتی شراکت داری اور طالبان جنگجوؤں کے مستقبل سمیت کئی معاملات پر بات چیت شامل ہے۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں