ڈونلڈ ٹرمپ نے برطانوی وزیر اعظم کو عظیم شخصیت قرار دے دیا

 

پبلک نیوز: برطانوی وزیراعظم کی جانب سے پارلیمنٹ معطل کرنے کے فیصلے پر ملکہ نے منظوری دے دی۔ حکومتی فیصلے کے خلاف لاکھوں افراد سڑکوں پر آ گئے۔ حکومتی اقدام کو نو ڈیل بریگزٹ کو یقینی بنانے کی سازش قرار دے دیا۔ ٹرمپ نے بورس جونسن کو عظیم قرار دے دیا۔

 

تفصیلات کے مطابق برطانوی وزیرِ اعظم بورس جونسن کی پارلیمنٹ معطل کرنے کی سفارش ملکہ نے قبول کر لی۔ برطانوی پارلیمنٹ ستمبر کے دوسرے ہفتے میں معطل کر دی جائے گی۔ جس کے بعد 14 اکتوبر کو ملکہ الزبتھ تقریر کریں گی۔

 

دوسری جانب برطانوی وزیر اعظم بورس جونسن کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ کی معطلی کا فیصلہ ضروری تھا کیونکہ ان کی حکومت کو آئندہ کا لائحہ عمل تیار کرنا ہے اور اس کے بعد بھی بریگزٹ پر بحث کے لیے کافی وقت ہوگا۔ اپوزیشن نے حکومتی فیصلے کو جمہوریت کے لیے خطرہ جبکہ ہائوس آف کامن اسپیکر نے اسے آئینی ظلم قرار دے دیا۔

 

دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے برطانوی حکومت کے اس اقدام کی حمایت کی اور بورس جونسن کو عظیم شخصیت قرار دے دیا۔ اپنے ٹویٹ میں ان کا کہنا تھا کہ خاص طور پر حقائق کی روشنی میں بورس نے وہی کیا جو کرنا چاہیے تھا۔

 

واضح رہے کہ پارلیمنٹ معطل کرنے کے فیصلے کے خلاف مختلف شہروں میں مظاہرے پھوٹ پڑے۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ معطل کرنے کے اقدام کا مقصد نو ڈیل بریگزٹ کو یقینی بنانا ہے۔

 

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں