بھارتی آرمی چیف کی پاکستان کیخلاف دوغلی پالیسی کھل کر سامنے آ گئی

پبلک نیوز: بھارتی آرمی چیف کی دوغلی پالیسی کھل کر سامنے آ گئی ہے۔ جنرل بپن راوت نے طالبان سے مذاکرات کی حمایت کر دی ہے۔ مقبوضہ کشمیر کے حالات پر کہا کہ طالبان سے مذاکرات کی پالیسی کشمیر میں نہیں چل سکتی یہاں مذاکرات ہماری شرائط پر ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کی جانب سے امن مذاکرات کاجواب گولیوں سے دینے والے بھارت کے آرمی چیف جنرل بپن راوت نے ایک بار پھر ڈھٹائی کا مظاہرہ کر دیا۔ افغانستان میں طالبان سے مذاکرات کی حمایت کر دی جبکہ کشمیر میں مذاکرات پر کہا کہ یہاں حالات اور ہیں۔

جنرن بپن راوت نے کہا کہ اگر افغانستان میں بھارت کے مفادات ہیں تو دیگر ممالک کی طرح بھارت کو بھی طالبان سے مذاکرات کرنے چاہئیں اور ہمیں ان مذاکرات کا حصہ بننا چاہیے۔ آرمی چیف نے پاکستان کے خلاف زہر اگلتے ہوئے کہا کہ پاکستان افغانستان کو اپنے گھر کا پچھلا حصہ سمجھتا ہے اس لیے وہ افغانستان میں ایسی صورت حال چاہتا ہے جو پاکستان کے مفاد میں ہو۔

بھارتی آرمی چیف نے کشمیر کے حوالے سے کہا کہ ہر جگہ کے لیے الگ پالیسی ہوتی ہے اور ہر جگہ ایک ہی پالیسی نہیں چلائی جا سکتی۔ انہوں نےکہا کہ مقبوضہ کشمیر میں مذاکرات صرف ہماری شرائط پر ہی ہوں گے۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں