باہمت خاتون ڈاکٹر طیبہ ظفر کو پبلک کا سلام

لاہور (سدرہ غیاث) پاکستان کی بیٹی ڈاکٹر طیبہ ظفر کا نام تاریخ میں سنہری حروف میں لکھا جا چکا ہے۔ ڈاکٹر طیبہ انٹارٹک ریسرچ کا سفر کرنے والی پہلی پاکستانی خاتون بن گئی۔ انٹارٹیکا میں پہنچی تو سبز ہلالی پرچم لہرانا نہیں بھولیں۔

 

آسٹرو فزیکس میں پی ایچ ڈی کرنے والی ڈاکٹر طیبہ ظفر نے پاکستان کا نام روشن کر دیا۔ قوم کی ہونہار بیٹی ڈاکٹر طیبہ نے ہومئیر باؤنڈ پروگرام کے تحت انٹارٹک ریسرچ کے سفر کرنے والی پہلی پاکستانی خاتون ہونے کا اعزاز اپنے نام کر لیا ہے جس پر پوری قوم کو اپنی بیٹی پر فخر ہے۔

 

26 ممالک میں سے 80 خواتین کو منتخب کیا گیا جس میں عالمی سطح پر سائنس، ٹیکنالوجی، انجینئرنگ اور ریاضی کے ماہرین نے شرکت کی۔ جس میں ڈاکٹر طیبہ ظفر پاکستان کا واحد فخر بھی شامل تھیں۔

 

ڈاکٹر طیبہ ظفر نے 3 ہفتوں کے لیے انٹارٹیکا کا دورہ کیا اور موسمیاتی تبدیلی سے متاثر ہونے والی مختلف سائٹس کا دورہ بھی کیا۔ ڈاکٹر طیبہ ظفر نے پبلک نیوز سے گفتگو میں کہا کہ پاکستان میں خواتین کو سائینس و ٹیکنالوجی کے مضامین میں مزید توجہ دیتے ہوئے آگے بڑھنا ہو گا تاکہ بڑھتی ہوئی موسمیاتی تبدیلیوں کو کم کر کے پاکستان کو محفوظ کیا جا سکے۔

 

ڈاکٹر طیبہ ظفر کہتی ہیں انٹارٹیکا کے سفر میں کہکشاؤں کے ارضیاتی ماحول کے ساتھ ساتھ موسمیاتی مسائل کو سمجھنے میں مدد ملی۔

حارث افضل  6 ماه پہلے

متعلقہ خبریں