سابق وزیراعظم نواز شریف کا علاج پاکستان میں ممکن ہے: ڈاکٹر محمود ایاز

لاہور(پبلک نیوز) سمز ہسپتال کے پرنسپل اور میڈیکل بورڈ کے سربراہ ڈاکٹر محمود ایاز کا کہنا ہے کہ پہلے دن ہم نے نواز شریف کا تفصیلی طبی معائنہ کیا، دوائیوں میں معمولی ردوبدل کیا گیا ہے۔ نواز شریف کا علاج پاکستان میں ممکن ہے۔

 

سابق وزیراعظم نواز شریف کی صحت کے حوالے سے سمز ہسپتال کے پرنسپل اور میڈیکل بورڈ کے سربراہ ڈاکٹر ڈاکٹر محمود ایاز نے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ہم نے پہلے دن سابق وزیراعظم نواز شریف کا تفصیلی طبی معائنہ کیا، نواز شریف کا علاج پاکستان میں ممکن ہے۔ دوائیوں میں معمولی ردوبدل کیا گیا ہے۔ ہمارے پاس تین ٹرمز آف ریفرنس تھے۔

 

ڈاکٹر ڈاکٹر محمود ایاز نے کہا کہ تمام ڈیپارٹمنٹس کے ہیڈز میڈیکل بورڈ میں شامل تھے، ہم نے نواز شریف کے طبی معائنے کے علاوہ ان کے خون، ہارمون، دل، سٹی سکین کیا۔ ہم نے نواز شریف کے گردے کے ٹیسٹ کیے، ٹانگوں، آنکھوں، دماغ کے خون کے شریانوں کے ٹیسٹ کیے۔ ہم نے آج فائنل طبی معائنہ کیا ہے۔ محکمہ داخلہ کو تمام سفارشات بھجوائی جائیں گی۔

 

ڈاکٹر ڈاکٹر محمود ایاز نے مزید کہا کہ جب کسی مریض کا ٹیسٹ کیا جاتا ہے ہم آئینی طور پر ٹیسٹ کی رپورٹ نہیں بتا سکتے، میاں نواز شریف کو بلڈ پریشر، شوگر، گردوں کا مسئلہ، خون کی شریانوں کا مسئلہ ہے، ہم تمام سفارشات محکمہ داخلہ کو بھیجیں گے، ہم نے محکمہ داخلہ کو سفارش کی ہے کہ انکا ڈیٹیل طبی معائنہ کیا جائے۔ سفارش کی ہے کہ انکا سپیشلائزڈ طبی معائنہ کیا جائے، اور انہیں شفٹ کرنے کا حتمی فیصلہ محکمہ داخلہ کرے گا۔ نواز شریف کا علاج پاکستان میں ممکن ہے۔

عطاء سبحانی  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں