ڈیفنس میں لڑکی کو اغوا کرنے والے ملزمان تاحال گرفتار نہیں ہو سکے

کراچی (پبلک نیوز) ڈیفنس میں لڑکی کے اغوا کی واردات میں فائرنگ سے زخمی ہونے والے نوجوان کا بیان قلمبند نہیں کیا جاسکا جبکہ اغوا میں استعمال کی جانے والی کار سے مشابہت رکھنی والی گاڑی  گلشن اقبال مون گارڈ کے قریب سے لا وارث حالت میں مل گئی۔

 

کراچی کے علاقے ڈیفنس سے دعامنگی کا اغوا، معاملے میں کوئی پیش رفت نہ ہوسکی، انتظامیہ ہاتھ پر ہاتھ دھرے رہ گئی۔ دعامنگی کی عدم بازیابی پر سول سوسائٹی اور مغویہ کے اہلخانہ نے تین تلوار پر احتجاج کیا اور ملزموں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا۔

 

ادھر فائرنگ سے زخمی نوجوان حارث کو ایمرجنسی وارڈ سے اسپیشل کیئر میں منتقل کر دیا گیا۔ پولیس نے اغوا کی واردات میں مشابہت رکھنے والی کار گلشن اقبال سے تحویل میں لے کر فارنزک کے لیے بھجوادی۔

 

ذرائع کے مطابق کار 27 نومبر کو فیروز آباد کے علاقے سے چھینی گئی۔ تفتیشی حکام کے مطابق واردات سے ملنے والی گولی کے ایک خول کی فارنزک رپورٹ موصول ہوئی جس سے معلوم ہوا کہ اسلحہ پہلے کسی واردات میں استعمال نہیں ہوا۔

 

واقعے کے تین دن بعد اینٹی وائیلنٹ کرائم سیل کی ٹیم نے بھی جائے وقوعہ پر پہنچ کر لوگوں سے معلومات لیں اور اطراف  کے راستوں سے سی سی ٹی وی فوٹیج بھی حاصل کی۔

احمد علی کیف  4 روز پہلے

متعلقہ خبریں