پڑھے گا پاکستان تو ہی بڑھے گا پاکستان

اسلام آباد (پبلک نیوز) تعلیم سب کے لیے، یہ نعرہ یوں تو پاکستان کے سیاستدان اقتدار حاصل کرنے کے لیے صرف الیکشن کے دنوں میں ہی لگاتے نظر آتے ہیں۔ مگر نفسانفسی کے اس دور میں بھی ایک شخص ایسا ہے جو تین دہائیوں سے گلی محلوں سڑکوں گندگی کے ڈھیروں سے کوڑا چنتے بچوں کو زیور علم سے آراستہ کرنے میں جٹا ہوا ہے۔

 

نہ دیواریں، نہ چھت، نہ میز نہ کرسی، نہ بجلی، نہ ہی پانی اور نہ ہی پتھر کا دور کوئی دور دراز دیہی علاقہ بھی نہیں۔ جدید ترین وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کا اوپن ائیر سکول جو اسلام آباد کے پوش علاقے سیکٹر ایف سکس کے پارک میں ہے۔


سکول میں بچوں کے سر پر سائبان ہے نہ ہی چار دیواری۔ ان کے پاس ایک کھلا میدان ضرور ہے۔ جہاں 35 سال سے ماسٹر محمد ایوب کوڑا چننے والے بچوں کو پڑھنا لکھنا سکھا رہے ہیں۔

 

سکول میں 230 طلبا زیرِ تعلیم ہیں۔ یہاں رنگ و نسل، ذات پات اور مذہب کی کوئی تفریق نہیں۔ مقصد صرف اور صرف تعلیم دینا۔ کچے فرشوں پر لکھتے لکھتے کچھ طلباء استاد بھی بن گئے لیکن سکول کے حالات نہیں بدلے۔

 

آج بھی ایسے لوگ دنیا میں موجود ہیں جنہیں حقیقی معنوں میں ارض وطن سے محبت ہے اور وہ اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ پڑھے گا پاکستان تو ہی بڑھے گا پاکستان۔ ایسے حقیقی زندگی کی ہیروز کو پبلک نیوز کا سلام۔

حارث افضل  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں